پل سراط۔ ۔ ۔ عابدہ رحمانی

جمعے کی نماز میں شاہدہ سے ملاقات ہوئی تو کہنے لگی "باجی! کل سے تجوید اور تفسیر کی کلاس 10 بجے صبح شروع کر رہے ہیں۔ آپ بھی آئیے گا” اگلے دن میں حسب وعدہ پہنچ گئی، مدیحہ تجوید پڑھانے لگی پھر شاہدہ نے تفسیر اور ترجمہ کیا۔ سورہ الفاتحہ سے آغاز تھا، یہ کلاس Read more about پل سراط۔ ۔ ۔ عابدہ رحمانی[…]

اس نظم میں ۔۔۔ میراجی

مندرجہ ذیل نظموں کا جائزہ لیا جائے گا۔ (۱) بوادی کہ درآں خضر را عصا خفت است۔ عطا اللہ سجاد (ہمایوں )   (۲) طلوع آفتاب امین حزیں سیالکوٹی (عالمگیر)   (۳) ایسا کیوں ہوتا ہے۔ سلام مچھلی شہری (ادب لطیف)   بظاہر اردو شعرا کے دو بڑے گروہ اس وقت ملک میں پھیلے ہوئے Read more about اس نظم میں ۔۔۔ میراجی[…]

نئی نظم کے معمار:انوار فطرت۔ ۔ ۔ محرک: ظفر سید

فیس بک کے گروہ ’حاشیہ‘ کے تحت کئی نظموں پر آن لائن مباحثے منعقد کئے گئے تھے۔ ان میں سے ایک یہاں پیش ہے۔ جو بطور ای بک بھی پڑھا جا سکتا ہے۔ باقی کے لئے احباب ان روابط پر کلک کر سکتے ہیں : نئی نظم کے معمار۔ ضیا جالندھری۔ ۔ ۔ محرک: ظفر Read more about نئی نظم کے معمار:انوار فطرت۔ ۔ ۔ محرک: ظفر سید[…]

حمید سہروردی کی نظم "صفر”کا تجزیہ۔ ۔ ۔ عبد الرب اُستاد

________________________________________________ حمید سہروردی ________________________________________________   ایک صفر صفر دو صفر صفر صفر تین صفر صفر صفر صفر چار صفر صفر صفر صفر صفر پانچ صفر صفر صفر صفر صفر صفر چھ صفر صفر صفر صفر صفر صفر صفر سات صفر صفر صفر صفر صفر صفر صفر صفر آٹھ صفر صفر صفر صفر صفر صفر صفر Read more about حمید سہروردی کی نظم "صفر”کا تجزیہ۔ ۔ ۔ عبد الرب اُستاد[…]

جھلملاتی ہوئی نیند، سُن:ایک تجزیہ۔ ۔ ۔ دانیال طریر

________________________________________________ جھلملاتی ہوئی نیند، سُن ________________________________________________ رفیق سندیلوی ________________________________________________   اَے چراغوں کی لوکی طرح جھلملاتی ہوئی نیند، سُن میرا اُدھڑا ہوا جسم بُن خواب سے جوڑ لہروں میں ڈھال اِک تسلسُل میں لا نقش  مربوط کر نرم، ابریشمیں کیف سے میری درزوں کی بھر میری مٹّی کے ذرّے اُٹھا میری وَحشت کے بکھرے ہوئے Read more about جھلملاتی ہوئی نیند، سُن:ایک تجزیہ۔ ۔ ۔ دانیال طریر[…]

رفیق سندیلوی کی نظم : ’’وُہی مخدوش حالت‘‘۔ ۔ ۔ ڈاکٹر طارق ہاشمی

  ________________________________________________ وُہی مخدوش حالت ________________________________________________   رفیق سندیلوی ________________________________________________   ہمیشہ سے وُہی مخدوش حالت ایک آدھی مینگنی دُم سے لگی ہے ناک میں بلغم بھرا ہے ہڈّیاں اُبھری ہوئی ہیں پشت کی دو روز پہلے ہی مُنڈی ہے اُون میری سردیوں کے دِن ہیں چٹیل بے نُمو میدان میں ریوڑ کے اندر سَر Read more about رفیق سندیلوی کی نظم : ’’وُہی مخدوش حالت‘‘۔ ۔ ۔ ڈاکٹر طارق ہاشمی[…]

چوپال میں سنا ہوا قصہ۔ ایک تجزیہ۔ ۔ ۔ ایم۔ مبین

________________________________________________ چوپال میں سنا ہوا قصہ ________________________________________________ انور قمر ________________________________________________ گاؤں کی چوپال ویران پڑی ہوئی ہے۔ پوہ کی رات ہے۔ برفیلے جھونکوں سے برگد پر ٹنگی قندیلیں جھول جھول جاتی ہیں۔ ۔ ۔ ایک بوڑھا گاؤں سے دور چلا جاتا ہے۔ ایک ہاتھ میں اس کے فاختہ ہے اور دوسرے میں کتاب۔ پیچھے پیچھے Read more about چوپال میں سنا ہوا قصہ۔ ایک تجزیہ۔ ۔ ۔ ایم۔ مبین[…]

سائرہ غلام نبی کی کہانی ’’سہمی ہوئی تصویر‘‘ اور ایک تجزیاتی تجربہ۔ ۔ ۔ زیب اذکار حسین

________________________________________________ سہمی ہوئی تصویر ________________________________________________ سائرہ غلام نبی ________________________________________________ جیسے ہی ان سب کو قدموں کی آہٹ سنائی دی، اس حبس زدہ کمرے میں صدیوں کا سنّاٹاٹھہر گیا۔ ’’آ گیا سالا دماغ کی دہی کرنے ‘‘ ان میں سے کسی نے زیرِ لب کہا۔ باقی سب مصروف دکھائی دینے کی اداکاری کرنے لگے۔ صاف لگتا Read more about سائرہ غلام نبی کی کہانی ’’سہمی ہوئی تصویر‘‘ اور ایک تجزیاتی تجربہ۔ ۔ ۔ زیب اذکار حسین[…]

ذوقی کی فکری جہت نالۂ شب گیر کے حوالے سے۔ ۔ ۔ الماس فاطمہ

’’کیا کہتی ہے مجھ سے میری روٹھی ہوئی تقدیر ائے نالۂ شب گیر…….. بیگانی ہوئی جاتی ہے مجھ سے میری تصویر ائے نالۂ شب گیر…….. کیوں لکھنے لگا کوئی میرے درد کی تفسیر ائے نالۂ شب گیر……..‘‘ موجودہ عہد کی ایک ایسی شخصیت جو اپنے شاندار ناولوں اور افسانوں سے اردو ہی نہیں بلکہ ہندی Read more about ذوقی کی فکری جہت نالۂ شب گیر کے حوالے سے۔ ۔ ۔ الماس فاطمہ[…]

مکاں سے لامکاں تک محیط و بسیط آفاقی پیغام۔ ۔ ۔ ڈاکٹر سلیم خان

انسان اپنی زندگی کا شعوری سفر شروع کرنے سے بہت پہلے لاشعوری طور پر ایک نام سے منسوب ہو جاتا ہے۔ قلمی سفر میں بھی یہی ہوتا ہے ابتداء ہی میں یہ جانے بغیر کے اسے کن راہوں سے گزرنا ہے اور کن منازل کو سر کرنا ہے فنکار اپنے لئے ایک نام تجویز کر Read more about مکاں سے لامکاں تک محیط و بسیط آفاقی پیغام۔ ۔ ۔ ڈاکٹر سلیم خان[…]