غزلیں ۔۔۔ سلیمان جاذب

      ترے رستے میں بیٹھے ہیں، تو اس میں کیا برائی ہے تجھے ہم دیکھ لیتے ہیں، تو اس میں کیا برائی ہے   ہمارا جرم اتنا ہے، تمہیں اپنا سمجھتے ہیں تمہیں اپنا سمجھتے ہیں، تو اس میں کیا برائی ہے   بچھڑ کر تم سے ہم جاناں تمہارے پاس ہوتے ہیں Read more about غزلیں ۔۔۔ سلیمان جاذب[…]

غزل ۔۔۔ اقبال رضوی شارب

      مرے وجود میں شامل جو سرکشی ہے میاں انا کی شکل میں ظاہر وہ ہو رہی ہے میاں   کشیدگی سے بھری یہ جو زندگی ہے میاں کسی کے لطف سے اسمیں شگفتگی ہے میاں   ہر ایک بات پہ ردِّ عمل نہیں اچھا ذرا سا صبر کہ دنیا تو سرپھری ہے Read more about غزل ۔۔۔ اقبال رضوی شارب[…]

مجھے کہنا ہے کچھ۔۔۔۔

ایک تاریکی چھائی ہوئی ہے حدِّنظر تک۔ ایک طرف کورونا وبا کا خوف اور اس کے نتیجے میں پیدا شدہ غیر یقینی صورت حال، اور دوسرے اب موت کی دستک قریب قریب سنائی دینے لگی ہے۔ مجتبیٰ حسین کی موت کے غم سے ہم باہر آئے بھی نہیں تھے کہ مزید قریبی لوگوں کی سناؤنی Read more about مجھے کہنا ہے کچھ۔۔۔۔[…]

غزل ۔۔۔ جمشید مسرور

  ہوتا ہے زندگی کا دبے پاؤں گھومنا ہونٹوں پہ تشنگی کا دبے پاؤں گھومنا دیکھا ہے میں نے اور سمندر نے ایک ساتھ ساحل پہ چاندنی کا دبے پاؤں گھومنا کھو جانا بے نیازیئ پوشاک و شاک میں پھر ریت پہ سبھی کا دبے پاؤں گھومنا جُگنو بُجھا سکی نہ کبھی شام کی ہوا Read more about غزل ۔۔۔ جمشید مسرور[…]

غزلیں ،۔۔ شاہین

    دل لہو ہے نہ مری آنکھ تر افسوس نہیں اک خلش سی ہے کہیں کچھ مگر افسوس نہیں   اپنے پس ماندگاں میں ہوں فقط میں باقی اب کوئی بھی جو نہیں نوحہ گر افسوس نہیں   سرگرانی تھی مکینوں میں در و بام کے بیچ اب جو کم کم ہے غمِ بام Read more about غزلیں ،۔۔ شاہین[…]

یہ ہے میرا ہندوستان ۔۔۔ زبیر رضوی

  یہ ہے میرا ہندوستان میرے سپنوں کا جہان اس سے پیار ہے مجھ کو   ہنستا گاتا، جیون اس کا دھوم مچاتے موسم گنگا، جمنا کی لہروں میں سات نہروں کے سرگم تاج، ایلورہ جیسے سندر تصویروں کے البم یہ ہے میرا ہندوستان   دن البیلے، راتیں اس کی مستی کی سوداگر دھرتی جیسے Read more about یہ ہے میرا ہندوستان ۔۔۔ زبیر رضوی[…]

غزلیں۔۔. ڈاکٹر رؤف خیر

    ناکام و نامراد تو وہ خود ضرور ہے اس کی انگوٹھیوں میں زمرد ضرور ہے   موصوف کے کلامِ بلاغت نظام میں سرقہ اگر نہیں ہے، توارد ضرور ہے   مانا کمال یہ ہے کہ ہم بے کمال ہیں لیکن بساطِ شعر میں شد بُد ضرور ہے   بے لوث و بے غرض Read more about غزلیں۔۔. ڈاکٹر رؤف خیر[…]

جب کتوں نے بارش کے لیے دعا کی۔۔۔ حفیظ جالندھری

میری عمر بارہ سال تھی۔ میرا لحن داؤدی بتایا جاتا اور نعت خوانی کی محفلوں میں بلایا جاتا تھا۔ اس زمانے میں شعر و شاعری کے مرض نے بھی مجھے آ لیا تھا، اس لئے اسکول سے بھاگنے اور گھر سے اکثر غیر حاضر رہنے کی علّت بھی پڑ چکی تھی، جس کو میری زندگی Read more about جب کتوں نے بارش کے لیے دعا کی۔۔۔ حفیظ جالندھری[…]