آخری بند ۔ ۔ ۔ صفدر علی حیدری

’ابا! سیلاب کا خطرہ کب ٹلے گا؟‘ ’بیٹا! جب دریا کا زور ٹوٹے گا‘ ’ابا یہ دریا کو ہوا کیا ہے؟ اتنے غصے میں پہلے تو کبھی نہیں دیکھا؟‘ ’بہت ناراض ہے ہم سے‘ ’وہ کیوں ابا؟‘ ’ہم اس کے بچوں کی قدر جو نہیں کرتے‘ ’دریا کے بھی کوئی بچے ہوتے ہیں‘ وہ حیرت Read more about آخری بند ۔ ۔ ۔ صفدر علی حیدری[…]

سورج مسیح ۔۔۔ عمار نعیمی

سورج نے رمضان کے پہلے روزے بھی حسب معمول 10 بجے دکان کھولی اور صفائی شروع کر دی۔ مشینیں باہر ڈِسپلے کیں۔ شیشوں کو اخبار سے اچھی طرح صاف کیا۔ وہ قسطوں کی دکان پر ملازمت کرتا تھا۔ مالکِ دُکان شیخ صاحب 11 بجے دکان پر آئے۔ سورج نے ان سے روزے کا احوال پوچھا: Read more about سورج مسیح ۔۔۔ عمار نعیمی[…]

پزّا بوائے ۔۔۔ توصیف بریلوی

پزا بوائے نے اپنی بائیک پارکنگ میں کھڑی کی، وارمر (Warmer) سے پزا نکالا اور لفٹ میں سوار ہو گیا۔ اب وہ ایک ڈور بیل بجا رہا تھا، کچھ ہی دیر میں دروازہ کھلا۔ ایک گورا، خوبصورت اور لمبی انگلیوں کے ناخنوں پر نیل پینٹ والا ہاتھ باہر آیا۔ اس نے پزا بوائے کا گریبان Read more about پزّا بوائے ۔۔۔ توصیف بریلوی[…]

ابتدا کی طرف واپسی ۔۔۔ احمد رشید (علیگ)

میت کی تجہیز و تکفین کے بعد، دعائے مغفرت ہوئی۔ آہستہ آہستہ لوگ واپس ہو گئے کہ واپسی ان کا مقدر ہے۔ قبرستان میں سناٹا پھیل گیا۔ درختوں کے درمیان سے نکل کر سر پر تیز دھوپ کا بوجھ لیے اپنے بوجھل قدموں کو دھیرے دھیرے سمیٹتے ہوئے قبرستان کے دروازے پر آ گیا۔ سر Read more about ابتدا کی طرف واپسی ۔۔۔ احمد رشید (علیگ)[…]

نوری لہنگا ۔۔۔ عماؔر نعیمی

عصرِ حاضر کی رِیت کے مطابق آسمان نے اپنے رخِ روشن پہ اسموکی میک اپ کر لیا تھا۔ ستارے کسی دوشیزہ کی نتھنی کے مانند تاباں تھے۔ ماہ نے مہر سے ایک ماہ کا اضافی نور مستعار لے لیا تھا۔ اسے شعور تھا کہ شامِ وصل عُرس کی دیوی ہے۔ ہوا میں خنکی پاؤں پھیلا Read more about نوری لہنگا ۔۔۔ عماؔر نعیمی[…]

بھانبھڑ ۔۔۔ نجمہ ثاقب

جب مُشکی گھوڑی نے ڈھوک نواں لوک کے آر پار بہتے راج بہا کے تنگ مو گے کو پار کرنے کے لیے اپنے آبنوسی وجود کو تولا۔ تو دونوں وقت مِل رہے تھے اور کچے نیم پکّے گھروں سے نکلتا دھواں جھٹپٹے میں مد غم ہو گیا تھا۔ گھوڑی نے کنوتیاں دبائیں اور اگلے سموں Read more about بھانبھڑ ۔۔۔ نجمہ ثاقب[…]

کنگ خان ۔۔۔ داؤد کاکڑ

  ایک دن میں ان کی قبر کے پہلو میں چمن پر چوکڑی مار کر بیٹھا زیرِلب تلاوت کر رہا تھا۔ گرمی تھی اور کھلی دھوپ تھی۔ میری آنکھوں پر دھوپ کی عینک تھی لیکن اس کے باوجود میری آنکھیں بند تھیں تاکہ میں یکسوئی سے تلاوت کر سکوں۔ اچانک مجھے لگا جیسے کسی نے Read more about کنگ خان ۔۔۔ داؤد کاکڑ[…]

جنت کا باغ ۔۔۔ ناہید وحید قریشی

گلی کا موڑ مڑ کر وہ ان آوازوں تک پہنچنا چاہتی تھی جہاں سے ہنسی کا شور بلند ہو کر فضا میں مسکراہٹیں بکھیر رہا تھا۔ اچانک ہی اٹھنے والے بچوں کے قہقہے اس کو بھی ہنسنے پر مجبور کر دیتے تھے اس کے تیز اٹھتے قدم لمحہ بھر کو رکتے، وہ اس شور کی Read more about جنت کا باغ ۔۔۔ ناہید وحید قریشی[…]

راکھ سے بنی انگلیاں ۔۔۔ صادقہ نواب سحر

بائکلہ کے مصطفیٰ بازار علاقے سے سیدھے چلیں تو اُس سے پہلے ناریل واڑی سُنّی مسلم قبرستان لگتا ہے۔ اس کے آگے رے روڈ ریلوے اسٹیشن کا شروعاتی حصہ جھونپڑیوں اور جھونپڑے نما گھروں کے درمیان چھپا ہوا سا ہے۔ رے روڈ پُل پر دونوں جانب جھونپڑے بنے ہوئے ہیں۔ آگے جا کر دائیں جانب Read more about راکھ سے بنی انگلیاں ۔۔۔ صادقہ نواب سحر[…]

پی۔ سی۔ ارشد 29965 کی چاند رات ۔۔۔ نیر عابد کاظمی

وہ چھوٹے سے اس کمرے میں زمین پر پیر پسارے بیٹھا تھا۔ اس کا چہرہ بے تاثر مگر پرسکون اور آنکھوں میں بلا کا اطمینان دکھائی دیتا تھا۔ ان مانوس دیواروں پر نگاہ دوڑائی تو اپنے دن بھر کی مصروفیات اس کی نگاہوں میں گھوم گئیں۔۔۔ وہ معروف جسٹس صفدر علی کا گن میں تھا، Read more about پی۔ سی۔ ارشد 29965 کی چاند رات ۔۔۔ نیر عابد کاظمی[…]