اقبال کے تضادات ۔۔۔ ڈاکٹر رؤف خیر

  فکر و فن میں تبدیلی کے ساتھ فن کار کا فکری گراف بھی اونچ نیچ کا شکار ہو تو یہ کوئی تعجب کی بات نہیں قرآن وسنت سے تو ثابت ہے کہ ایمان بھی گھٹتا بڑھتا رہتا ہے نیکو کاروں کی صحبت میں مومن کا ایمان بڑھ جاتا ہے اور اگر بدکاروں کی صحبت Read more about اقبال کے تضادات ۔۔۔ ڈاکٹر رؤف خیر[…]

سید محمد اشرف کی ناول نگاری : امتیازات و خصوصیات ۔۔۔ صدام حسین

  سید محمد اشرف کے فکشن کے تعلق سے میں پروفیسر سیما صغیر صاحبہ کی اس رائے سے پوری طرح اتفاق کرتا ہوں : ’’سید محمد اشرف میرے پسندیدہ ادیب ہیں۔پہلی وجہ یہ کہ ان کی ہر تخلیق کی قرأت قاری کو یکسوئی سے اپنی گرفت میں لے لیتی ہے۔ وہ تہذیبی، تمدنی، ثقافتی، لسانی Read more about سید محمد اشرف کی ناول نگاری : امتیازات و خصوصیات ۔۔۔ صدام حسین[…]

جوش ملیح آبادی کی نظم ‘رشوت’ کا تجزیاتی مطالعہ ۔۔۔ ذوالفقار خان زلفی

  جوش ملیح آبادی ہمارے اردو ادب کے ایک اہم شاعر تصور کئے جاتے ہیں۔ آپ کو شاعر شباب اور شاعر انقلاب بھی کہا جاتا ہے۔ جوش کے کلام میں آہنگ، نغمگیت، موسیقیت، عظمت انسانی کے پہلو، کردار نگاری کی بہترین مثالیں، انسانی نفسیات اور معاشرے کی پھیلی ہوئی برائیوں کی ترجمانی دیکھنے کو ملتی Read more about جوش ملیح آبادی کی نظم ‘رشوت’ کا تجزیاتی مطالعہ ۔۔۔ ذوالفقار خان زلفی[…]

مجید امجد کی شاعری میں کَونیاتی اور سائنسی وژن ۔۔۔ شاہد ماکلی

  سائنس اور شاعری میں کئی باتیں مشترک ہیں۔ جیسا کہ شاعر اور سائنس دان ناربرٹ ہرسکارن (Norbert Hirschhorn) نے اپنے مضمون ’’جدید شاعری، جدید سائنس۔۔۔۔ ساخت، استعارہ اور مَظاہر‘‘ میں لکھا ہے: ’’شاعری اور سائنس کے درمیان گہرا تعلق ہے۔ دونوں ایک دوسرے سے مربوط ہیں، کیوں کہ دونوں کائنات اور انسانی بقا کی Read more about مجید امجد کی شاعری میں کَونیاتی اور سائنسی وژن ۔۔۔ شاہد ماکلی[…]

خاک خمیر کی تخلیقی کائنات ۔۔۔ سلیم انصاری

  انسانی تاریخ کے لا محدود سفر میں عشق ایک ازلی اور ابدی حقیقت ہے اور ہجر و وصل ایک فطری تجربہ۔ عشق کے بغیر کائنات کی ترسیل و ترویج اور تفہیم کا تصور ہی ممکن نہیں۔ لہٰذا انسانی زندگی کے ہر شعبۂ حیات میں عشق کی کار فرمائی اور اس کے محرکات و ممکنات Read more about خاک خمیر کی تخلیقی کائنات ۔۔۔ سلیم انصاری[…]

متذبذب ناقدین صنفِ نو ۔۔۔ عمار نعیمی

بہت مشہور اور زبان زد عام ضرب المثل ہے کہ ’ضرورت ایجاد کی ماں ہے‘۔ اگر اردو ادب کی بات کروں تو مجھ پر وا ہوتا ہے کہ یہ ضرب المثل شاید اردو ادب کے لیے بنی ہی نہیں۔ اس کی وجہ یہ ہو سکتی ہے کہ اردو ادب کو کبھی ضرورت ہی محسوس نہیں Read more about متذبذب ناقدین صنفِ نو ۔۔۔ عمار نعیمی[…]

کلیم عاجز کی شاعری میں تصوف کی جھلک ۔۔۔ وفا نقوی

کلیم عاجزؔ ایک ایسے شاعر ہیں جن کی شاعری میں میر تقی میرؔ کے لہجے کا عکس اپنی پوری جولانی کے ساتھ نظر آتا ہے ان کا کمال یہ ہے کہ انھوں نے ایک ایسے حزنیہ لہجے جس میں میرتقی میرؔ کے حزنیہ لہجے کی بازگشت سنائی دیتی تھی اسے نئی شاعری کے رنگ میں Read more about کلیم عاجز کی شاعری میں تصوف کی جھلک ۔۔۔ وفا نقوی[…]

اردو ڈرامے کی اندر سبھا دیوار میں چنوانے تک۔۔۔ ناہید وحید

اردو تھیٹر ڈراما نگاری ہمارے ہاں پنپ نہ سکی! یہ جواب، میرے لئے سوال بنا مجھے اس وقت سے پریشان کرتا رہا جب ہم ڈراما پڑھتے رہے اور جواباً یہی سنتے رہے کہ تھیٹر/ڈراما نگاری ہمارے ہاں پنپ نہ سکی۔ تھیٹر اور ڈراما سیکھنے کے عمل میں سوچتے بھی رہے کیوں، کیسے؟ اور کیا امتیاز Read more about اردو ڈرامے کی اندر سبھا دیوار میں چنوانے تک۔۔۔ ناہید وحید[…]

صغیر افراہیم کی پریم چند شناسی ۔۔۔ پروفیسر طارق سعید

اردو فکشن کا شاید سب سے بڑا نام پریم چند ہے۔ انھوں نے جس طرح سے اردو فکشن میں اپنے قلم سے بیسویں صدی کے ہندوستان کی عکاسی کی ہے اور جن مسائل کو ابھارا ہے، ویسی نظیر کسی دوسرے فنکار کے یہاں نظر نہیں آتی۔ خواہ اس کا تعلق کسی بھی زبان و ادب Read more about صغیر افراہیم کی پریم چند شناسی ۔۔۔ پروفیسر طارق سعید[…]

قدیم دکنی ادب میں تانیثیت ۔۔۔ ڈاکٹر غلام شبیر رانا

خواتین کے لب و لہجے میں تخلیق ادب کی روایت خاصی قدیم ہے۔ ہر زبان کے ادب میں اس کی مثالیں موجود ہیں۔ نوخیز بچے کی پہلی تربیت اور اخلاقیات کا گہوارہ آغوش مادر ہی ہوتی ہے۔ اچھی مائیں قوم کو معیار اور وقار کی رفعت میں ہمدوش ثریا کر دیتی ہیں۔ انہی کے دم Read more about قدیم دکنی ادب میں تانیثیت ۔۔۔ ڈاکٹر غلام شبیر رانا[…]