اکتوبر 3, 2013

تازہ شمارہ

مجھے کہنا ہے کچھ …..

وبا اور لاک ڈاؤن اور اس سے متاثرہ حالات کو نو ماہ سے زیادہ ہو چکے ہیں، اور اب ساری دنیا نے اس سے سمجھوتا کر لیا ہے۔ دنیا کو تو بہر حال چلنا ہی ہے۔ لیکن کیا سب کچھ ویسا ہی ہو گیا ہے یا ہونے والا ہے جیسا وبا سے پہلے تھا؟ نہیں، Read more about مجھے کہنا ہے کچھ …..[...]

نعت پاک۔۔۔ ظہیرؔ احمد

وہ ایک شخص دو عالم کی سروری والا شعور دے گیا شاہوں کو سادگی والا   ہزاروں چاند ستارے وہ کر گیا روشن وہ اک چراغ تھا سورج کی روشنی والا   وہ مُہرِ ختمِ نبوت ، وہ حرفِ آخرِ حق وہ اک رسول رسولوں میں آخری والا   قریبِ عرش خدا سے وہ محوِ Read more about نعت پاک۔۔۔ ظہیرؔ احمد[...]

نعت ۔۔۔ نور ایمان

    نگاہ اُن کو ڈھونڈتی ہے کس لیے گَھڑی گھَڑی جو یاد بن کے دل کے پاس ہیں وہ، اب مِلیں کبھی   شہِ عَرب کی خُوشبوؤں سے بام و در مہک اُٹھے کہ شہر دل سے جیسے وہ گزر گئے ابھی ابھی   غمِ جدائی میں یہ دل کا ماجرا تو دیکھیے فس Read more about نعت ۔۔۔ نور ایمان[...]

غزلیں ۔۔۔ سید آلِ احمد

میں ڈوبتے خورشید کے منظر کی طرح ہوں زندہ ہوں مگر یاد کے پتھر کی طرح ہوں   آثار ہوں اب کہنہ روایاتِ وفا کا اک گونج ہوں اور گنبد بے در کی طرح ہوں   اک عمر دلِ لالہ رُخاں پر رہا حاکم اب یادِ مہ و سال کے پیکر کی طرح ہوں   Read more about غزلیں ۔۔۔ سید آلِ احمد[...]

چائے کا ارغوانی دور ۔۔۔ مولانا ظفر علی خاں

چائے کا دور چلے، دور چلے، دور چلے جو چلا ہے تو ابھی اور چلے اور چلے چائے کا دور چلے، دور چلے، دور چلے   نہ ملے چائے، تو خوننابِ جگر کافی ہے بزم میں دور چلا ہے، تو ابھی اور چلے چائے کا دور چلے، دور چلے، دور چلے   دیکھتے دیکھتے پنجاب Read more about چائے کا ارغوانی دور ۔۔۔ مولانا ظفر علی خاں[...]

مظفر حنفی ۔۔۔ حیات

پیدائش: 01 اپریل 1936ء کھنڈوا، ہندستان وفات: 10 اکتوبر 2020ء دہلی نام محمد ابو المظفر، ڈاکٹر اور تخلص حنفی ہے۔ 01 اپریل 1936ء کو کھنڈوہ (مدھیہ پردیش) میں پیدا ہوئے۔ ان کا آبائی وطن ہسوہ، فتح پور (یوپی) ہے۔ 1960ء میں مدھیہ پردیش محکمہ جنگلات میں ملازم ہو کر بھوپال منتقل ہو گئے۔ اسی ملازمت Read more about مظفر حنفی ۔۔۔ حیات[...]

مظفرؔ حنفی : منفرد شاعرِ برِ صغیر ۔۔۔ منور احمد کنڈے

اس میں کوئی شک نہیں کہ مظفرؔ حنفی صاحب ایک قد آور شخصیت ہیں اور ان پر جتنا بھی لکھا جائے وہ کم ہے اور ذہین و با شعور قاری تشنگی محسوس کرتے ہوئے یہی کہے گا ’’حق تو یہ ہے کہ حق ادا نہ ہوا!‘‘ میں بھی مظفرؔ حنفی صاحب کے کلام کے مداحین Read more about مظفرؔ حنفی : منفرد شاعرِ برِ صغیر ۔۔۔ منور احمد کنڈے[...]

مظفر حنفی، ایک صاحبِ طرز فنکار ۔۔۔ کلیم حاذق

کسی فنکار کو بڑا بننے کے لئے صرف اتنا ہی کافی نہیں ہے کہ اس کے یہاں تخلیقی توانائی ہو یا تخلیق کرنے کا اپنا رنگ ڈھنگ اور اپنا اسلوب ہو۔ یہ سب باتیں تو ہر اس فنکار کے یہاں مل ہی جائیں گی جو فن کو ہنر مندی کے ساتھ استعمال کرنے کا گُر Read more about مظفر حنفی، ایک صاحبِ طرز فنکار ۔۔۔ کلیم حاذق[...]

فراقؔ و جوشؔ: تضادات اور مماثلتیں ۔۔۔ مظفّرؔ حنفی

تنقید کا ایک دبستان بطور خاص اصرار کرتا ہے کہ فنکاروں کی تخلیقی کاوشوں کا تجزیہ اور ان کی ادبی حیثیتوں کا تعین ان کے ادوار کے تناظر میں کیا جائے۔ بات اپنی جگہ جی کو لگتی ہے اور اکثر و بیشتر اوسط یا کمتر درجہ کی استعداد رکھنے والے فنکاروں کے بارے میں اس Read more about فراقؔ و جوشؔ: تضادات اور مماثلتیں ۔۔۔ مظفّرؔ حنفی[...]

شیطان کی خالہ ۔۔۔ مظفر حنفی

دودھ نمک میں گھولا اس نے میرا پرس ٹٹولا اس نے کمپیوٹر تک کھولا اس نے ٹیلی فون کا تار اُکھاڑا قلم دان آٹے میں گاڑا پاسپورٹ ابّو کا پھاڑا صوفے پر سیاہی لڑھکا دی ٹی۔ وی۔ پر تصویر بنا دی بریانی میں کھیر ملا دی صابن دانی پان پہ رکھی جوتی دسترخوان پہ رکھی Read more about شیطان کی خالہ ۔۔۔ مظفر حنفی[...]

بجیا تم کیوں روتی ہو؟ ۔۔۔ مظفّرؔ حنفی

چنانچہ وہی ہوا جس کا ڈر تھا۔ للّی بابا سمجھا کر ہار گئے۔ مولانا قادر کی عمر بھر منہ نہ دیکھنے والی دھمکی بھی کارگر نہ ہوئی۔ آپا نے جو فیصلہ کر لیا تھا اس سے ٹس سے مس نہ ہوئیں۔ ان دنوں گھر میں آئے دن ایک ہنگامہ برپا رہتا تھا۔ ’’ بی بی۔!‘‘ Read more about بجیا تم کیوں روتی ہو؟ ۔۔۔ مظفّرؔ حنفی[...]

غزلیں ۔۔۔ مظفر حنفی

(کلیات ’چنیدہ‘ سے) یہ چمک زخم سر سے آئی ہے یا ترے سنگِ در سے آئی ہے رنگ جتنے ہیں اس گلی کے ہیں ساری خوشبُو ادھر سے آئی ہے سانس لینے دو کچھ ہَوا کو بھی تھکی ماندی سفر سے آئی ہے دینا ہو گا خراجِ ظلمت کو روشنی سب کے گھر سے آئی Read more about غزلیں ۔۔۔ مظفر حنفی[...]

مسعود مفتی کے افسانے ۔۔۔ ڈاکٹر انور سدید

اُردو افسانے میں مسعود مفتی کا ظہور نہ حادثہ تھا نہ اتفاق، بلکہ میری نظر میں یہ ایک سماجی ضرورت تھی۔ ہر دور میں جب اخلاق پر زوال آ جاتا ہے، دائم قدریں شکستہ ہو جاتی ہیں۔ انسانیت سر بگریبان نظر آنے لگتی ہے اور شخصیت کے ظاہر اور باطن الگ الگ دنیائیں تعمیر کرنے Read more about مسعود مفتی کے افسانے ۔۔۔ ڈاکٹر انور سدید[...]

آسیب ۔۔۔ مسعود مفتی

وہ محض ایک شہری تھا۔ آپ جانتے ہیں نا۔ پاکستانی شہری کیا ہوتا ہے؟۔۔۔ وہی!۔۔۔ بہت شریف اور سیدھا سادا۔ جس سے کسی کو بھی کوئی خطرہ نہیں ہوتا۔ بالکل بے ضر ر۔۔۔ جھینگر جیسی لگاتار آواز بھی نہیں لگا سکتا کہ رات کاسناٹا ہی توڑ سکے۔ اسی لیے ہر طبقہ اس کی خاموشی سے Read more about آسیب ۔۔۔ مسعود مفتی[...]

نسخہ ۔۔۔ مسعود مفتی

ڈاکٹر صاحب نے گز بھر ہاتھ ہمارے پیٹ میں گھسیڑ ڈالا، دو گھونسے چھاتی پر دے مارے، ٹھوڑی پکڑ کر گردن جھٹکا ڈالی اور پھر پیشتر اس کے کہ ہمارا سانس درست ہو اور ہم مفصل حالات بتا سکیں وہ قلم لیے کاغذ پر پل پڑے۔ چشم زدن میں نسخہ گھسیٹا گیا۔ الفاظ ہمارے الجھے Read more about نسخہ ۔۔۔ مسعود مفتی[...]

گنجلک ۔۔۔ مسعود مفتی

افضل: ملزم امینہ: ملزم کی بیوی سیمیں: ملزم کی کالج کی دوست غلام رسول: ملزم کا چچا اور سُسر غلام محمد: ملزم کا باپ ملزم کی والدہ وکیل استغاثہ وکیلِ صفائی سب انسپکٹر جج پہلا سین (کمرۂ عدالت، ذرا اُونچے پلیٹ فارم پر جج بیٹھا ہے۔ عمر پچاس برس کے لگ بھگ۔ چہرے پر سنجیدگی، Read more about گنجلک ۔۔۔ مسعود مفتی[...]

حنیف ترین ۔۔۔ ایک ادبی دہشت گرد ۔۔۔ کے۔ این۔ واصف

ہماری سماعتوں اور بصارتوں پر آج کل جو لفظ سب سے زیادہ چھایا ہوا ہے وہ ہے ’’دہشت گردی‘‘۔ اخبار اُٹھائیے، ٹی وی کھولئے ہر طرف دہشت گردی کا چرچہ ہے۔ حنیف ترین کو دہشت گرد کہہ کر میں ان کی شخصیت کو مشکوک کرنا چاہتا ہوں نہ مجروح۔ اردو لغت میں دہشت گردی کے Read more about حنیف ترین ۔۔۔ ایک ادبی دہشت گرد ۔۔۔ کے۔ این۔ واصف[...]

ڈاکٹر حنیف ترین: پس منظر میں منظر بھیگا کرتے ہیں کا شاعر ۔۔۔ غلام نبی کمار

حنیف ترین شہر غزل کا ایک ایسا خوش بیاں شاعر ہے جس کا لڑکپن سرائے ترین سنبھل میں گزرا، عنفوانِ شباب کا کچھ وقت کشمیر کی خوب صورت و حسین وادی میں بسر ہوا، شباب کا کچھ حصہ علی گڑھ مسلم یونی ورسٹی جیسے عظیم ادارے میں تعلیم و تربیت کے دوران صرف ہوا اور Read more about ڈاکٹر حنیف ترین: پس منظر میں منظر بھیگا کرتے ہیں کا شاعر ۔۔۔ غلام نبی کمار[...]

غزلیں، نظمیں ۔۔ حنیف ترین

آئیے آسماں کی اور چلیں ساتھ لے کر زمیں کا شور چلیں چاند الفت کا استعارہ ہے جس کی جانب سبھی چکور چلیں یوں دبے پاؤں آئی تیری یاد جیسے چپکے سے شب میں چور چلیں دل کی دنیا عجیب دنیا ہے عقل کے اس پہ کچھ نہ زور چلیں سبز رت چھائی یوں ان Read more about غزلیں، نظمیں ۔۔ حنیف ترین[...]

آسمانِ ادب کی بدر منیر ڈاکٹر منیر زہرہ (مینا نقوی) ۔۔۔ عارفہ مسعود عنبر

یہ مرادآباد شہر کی خوش قسمتی ہے کہ اس شہر کو اللہ رب العزت نے وہ نایاب گوہر عطاء فرمائے ہیں جن کی جلاء نہ صرف مرادآباد میں بلکہ سارے ہندوستان میں پھیلی ہوئی ہے۔ مراداباد شہر نے اردو ادب کو ایسی ادبی شخصیات بخشیں جنہوں نے اردو ادب کی تاریخ میں مرادآباد کی آبرو Read more about آسمانِ ادب کی بدر منیر ڈاکٹر منیر زہرہ (مینا نقوی) ۔۔۔ عارفہ مسعود عنبر[...]

غزلیں ۔۔۔ مینا نقوی

دھوپ آئی نہیں مکان میں کیا ابر گہرا ہے آسمان میں کیا آہ کیوں بے صدا ہے ہونٹوں پر لفظ باقی نہیں زبان میں کیا ہو گیا نیلگوں بدن سارا تیر زہریلے تھے کمان میں کیا سارے کردار ساتھ چھوڑ گئے آ گیا موڑ داستان میں کیا جھلسا جھلسا ہے کیوں بدن سارا آ گئی Read more about غزلیں ۔۔۔ مینا نقوی[...]

رات کا رنگ ۔۔۔ شوکت حسین شورو/عامر صدیقی

وہ کروٹ بدل بدل کر پریشان ہو گیا، پھر بھی اس نے اٹھنا نہیں چاہا۔ گھڑی میں وقت دیکھا، جبکہ کچھ ہی دیر پہلے وقت دیکھ چکا تھا۔ ابھی تک دس بھی نہیں بجے تھے۔ ویسے اٹھنے کا وقت آٹھ بجے کا تھا۔ دس بجے آفس کی گاڑی لینے آتی تھی۔ لیکن آج فوتگی جیسا Read more about رات کا رنگ ۔۔۔ شوکت حسین شورو/عامر صدیقی[...]

انٹرویو: نیلم احمد بشیر، سوالات: سید نصرت بخاری

نیلم احمد بشیر معروف ادیب احمد بشیر کی بیٹی ہیں۔ 17۔ جنوری 1950 کو ملتان میں پیدا ہوئیں۔ کراچی ہی میں پلی بڑھی ہیں۔ لاہور کالج سے بی۔ اے کی سند حاصل کی۔ پنجاب یونی ورسٹی نے ایم۔ اے نفسیات کی ڈگری حاصل کی۔ لاہور میں ایڈورٹائزنگ کے شعبے سے وابستہ رہیں۔ طالب علمی کے Read more about انٹرویو: نیلم احمد بشیر، سوالات: سید نصرت بخاری[...]

فریاد آزرؔ کی غزلوں میں تخلیقی توانائی ۔۔۔ پروفیسر مناظر عاشق ہرگانوی

انسان کی تخلیقات خواہ عمارت ہو یا فنونِ لطیفہ کے شاہکار یا مختلف اوزار یا مشین، سب مادی کلچر کا جز ہیں۔ کسی قوم یا طبقہ کی بنائی ہوئی چیزوں پر نظر ڈالنے سے ہم اس قوم یا طبقے کے بارے میں بہت کچھ جان سکتے ہیں۔ آثارِ قدیمہ کے ماہرین کا ایک خاص کام Read more about فریاد آزرؔ کی غزلوں میں تخلیقی توانائی ۔۔۔ پروفیسر مناظر عاشق ہرگانوی[...]

قدیم دکنی ادب میں تانیثیت ۔۔۔ ڈاکٹر غلام شبیر رانا

خواتین کے لب و لہجے میں تخلیق ادب کی روایت خاصی قدیم ہے۔ ہر زبان کے ادب میں اس کی مثالیں موجود ہیں۔ نوخیز بچے کی پہلی تربیت اور اخلاقیات کا گہوارہ آغوش مادر ہی ہوتی ہے۔ اچھی مائیں قوم کو معیار اور وقار کی رفعت میں ہمدوش ثریا کر دیتی ہیں۔ انہی کے دم Read more about قدیم دکنی ادب میں تانیثیت ۔۔۔ ڈاکٹر غلام شبیر رانا[...]

صغیر افراہیم کی پریم چند شناسی ۔۔۔ پروفیسر طارق سعید

اردو فکشن کا شاید سب سے بڑا نام پریم چند ہے۔ انھوں نے جس طرح سے اردو فکشن میں اپنے قلم سے بیسویں صدی کے ہندوستان کی عکاسی کی ہے اور جن مسائل کو ابھارا ہے، ویسی نظیر کسی دوسرے فنکار کے یہاں نظر نہیں آتی۔ خواہ اس کا تعلق کسی بھی زبان و ادب Read more about صغیر افراہیم کی پریم چند شناسی ۔۔۔ پروفیسر طارق سعید[...]

اردو ڈرامے کی اندر سبھا دیوار میں چنوانے تک۔۔۔ ناہید وحید

اردو تھیٹر ڈراما نگاری ہمارے ہاں پنپ نہ سکی! یہ جواب، میرے لئے سوال بنا مجھے اس وقت سے پریشان کرتا رہا جب ہم ڈراما پڑھتے رہے اور جواباً یہی سنتے رہے کہ تھیٹر/ڈراما نگاری ہمارے ہاں پنپ نہ سکی۔ تھیٹر اور ڈراما سیکھنے کے عمل میں سوچتے بھی رہے کیوں، کیسے؟ اور کیا امتیاز Read more about اردو ڈرامے کی اندر سبھا دیوار میں چنوانے تک۔۔۔ ناہید وحید[...]

کلیم عاجز کی شاعری میں تصوف کی جھلک ۔۔۔ وفا نقوی

کلیم عاجزؔ ایک ایسے شاعر ہیں جن کی شاعری میں میر تقی میرؔ کے لہجے کا عکس اپنی پوری جولانی کے ساتھ نظر آتا ہے ان کا کمال یہ ہے کہ انھوں نے ایک ایسے حزنیہ لہجے جس میں میرتقی میرؔ کے حزنیہ لہجے کی بازگشت سنائی دیتی تھی اسے نئی شاعری کے رنگ میں Read more about کلیم عاجز کی شاعری میں تصوف کی جھلک ۔۔۔ وفا نقوی[...]

متذبذب ناقدین صنفِ نو ۔۔۔ عمار نعیمی

بہت مشہور اور زبان زد عام ضرب المثل ہے کہ ’ضرورت ایجاد کی ماں ہے‘۔ اگر اردو ادب کی بات کروں تو مجھ پر وا ہوتا ہے کہ یہ ضرب المثل شاید اردو ادب کے لیے بنی ہی نہیں۔ اس کی وجہ یہ ہو سکتی ہے کہ اردو ادب کو کبھی ضرورت ہی محسوس نہیں Read more about متذبذب ناقدین صنفِ نو ۔۔۔ عمار نعیمی[...]

ظفرؔ کمالی: پیکرِ اخلاص و مظہرِ انکسار ۔۔۔ افتخار راغبؔ

ظفرؔ کمالی صاحب سے میری پہلی ملاقات میر گنج کی ایک شعری نشست میں تقریباً بیس برس پہلے ہوئی تھی۔ میں پہلی بار اپنے آبائی وطن میں کسی شعری محفل میں شریک ہوا تھا۔ موصوف نے مزاحیہ کلام سنا کر خوب داد و تحسین وصول کی تھی۔ آپ کی پختہ اور منفرد شاعری، ہمیشہ مسکراہٹ Read more about ظفرؔ کمالی: پیکرِ اخلاص و مظہرِ انکسار ۔۔۔ افتخار راغبؔ[...]

کورونا وائرس ۔۔۔ مصحف اقبال توصیفی

ہم کو لگتا تھا سب کچھ ٹھیک ہے۔ لیکن دل میں یہ کھٹکا بھی کہ سب کچھ ٹھیک نہیں ہے تبھی تو ننگے پاؤں ۔۔ آدھی رات کو اس کے در پر اس سے ملنے جاتے تھے (وہ کہتا تھا آؤ، بیٹھو تھکے ہوئے سے لگتے ہو) ہم خاموش کہ وہ کچھ بولے ۔۔۔ کچھ Read more about کورونا وائرس ۔۔۔ مصحف اقبال توصیفی[...]

آپ ولی نعمت ہیں ۔۔۔ ستیہ پال آنند

میر جملہ ہیں جناب آپ ولی نعمت ہیں اور میں آپ کی پرجا ہوں رعایا ہوں، فقط باج گذار آپ کے خیل و حشم میں ہوں مرے ان داتا دیکھئے میری طرف، عالی جاہ (جیسا کہ آپ کا فرمان ہے، ہاری کے لیے) آپ کے سامنے شرمندہ کھڑا ہوں، مالک جوتا منہ میں لیے اور Read more about آپ ولی نعمت ہیں ۔۔۔ ستیہ پال آنند[...]

پارچہ، اک شعر بے چارہ ۔۔۔ ستیہ پال آنند

…………….عابدہ وقار کی نذر………. پارچہ الوان، ست رنگا، چمکتا بھیگتے رنگوں کی ململ دھوپ اور برسات کا جیسے ملن ہو کھٹا میٹھا، آسمانی، سبز، نیلا، زرد، اُودا پارچہ رنگین، بو قلمون، روشن پارچہ جذبات کے سب رنگ اپنے دل کی دھڑکن میں سمیٹے، شاعرِ ادراک کے جب ذہن میں ابھرا تو اک تصویر سا تھا Read more about پارچہ، اک شعر بے چارہ ۔۔۔ ستیہ پال آنند[...]

تین نظمیں ۔۔۔ عارفہ شہزاد

حس لامسہ کو ابد ہے! ____________________________ اکھڑے اکھڑے لفظوں والے! قہر نہیں ہے چھتناروں میں اگتی آنکھیں، آگ ازل سے بستی بستی قریہ قریہ دھوپ جلا ہے ڈرتے ڈرتے راہگیروں کو جھانک رہے ہو چھاؤں، دل کی ہے کھیلے گی کھیل انوکھا! الجھے الجھے تانے بانے روح، بدن کے پوریں، پوروں سے کہتی ہیں، بات Read more about تین نظمیں ۔۔۔ عارفہ شہزاد[...]

مرہموں کی آس میں ۔۔۔۔ ظہیرؔ احمد

زخم ہائے جاں لئے مرہموں کی آس میں کب سے چل رہا ہوں میں دہرِ ناسپاس میں چلتے چلتے خاک تن ہو گیا ہوں خاک میں تار ایک بھی نہیں اب قبا کے چاک میں دل نشان ہو گیا ایکیاد کا فقط رہ گئی ہے آنکھ میں ایک دید کی سکت زہر جو ہوا میں Read more about مرہموں کی آس میں ۔۔۔۔ ظہیرؔ احمد[...]

گؤ دان سے پہلے ۔۔۔ اسلم جمشید پوری

’’گائے، اللہ کی نعمتوں میں سے ایک نعمت ہے۔ جانوروں میں گائے کی اہمیت سے کسے انکار ہے۔ دودھ کے معاملے میں گائے کا جواب نہیں۔ گائے کا دودھ جہاں صحت کے لیے انتہائی مفید ہے، وہیں بہت سی جسمانی بیماریوں کا علاج بھی ہے۔‘‘ ’’اچھا اچھا۔۔۔ ٹھیک ہے۔۔۔ یہ تو بتا آج گائے پر Read more about گؤ دان سے پہلے ۔۔۔ اسلم جمشید پوری[...]

سائیں لوگ ۔۔۔ نجمہ ثاقب

دائی نے خدا بخش کے بیٹے کی آنول کاٹ کے رنگیلے پیڑھے کو آگے سرکایا۔ تو نو مولود کی دادی نے بسم اللہ پڑھ کے سفید اور سیاہ ڈبیوں والا ملتانی کھیس اُس کے اوپر ڈال دیا اور دوپٹے کے پلو میں بندھا لال نوٹ بچے کے سر پہ کالی چھتری بنائے بالوں پر وار Read more about سائیں لوگ ۔۔۔ نجمہ ثاقب[...]

بائیں پہلو کی پسلی ۔۔۔ احمد رشید

اس رنگ منچ پر ایک اور سانحہ رو نما ہوا یہ پہلا ہے نہ آخری۔ میری تخلیق اس بے مانند بے مثل ربّا کی منشا ہے اگر میری مرضی شامل ہوتی تو جسِد خاکی جو اشرف المخلوقات ہے کے بجائے میں زمین پر اُگا ہوا درخت خلق ہوتی جو میرے لئے باعثِ افتخار اس لئے Read more about بائیں پہلو کی پسلی ۔۔۔ احمد رشید[...]

بلیکِش (Blackish) ۔۔۔ توصیف بریلوی

قہوہ خانے کے سامنے پہنچ کر ہما رک گئی۔ اس نے نظریں اٹھا کر دیکھا سامنے ایک چھوٹی سی حویلی نما عمارت تھی جس کے کنگورے، بلند دروازہ، کھڑکیاں، گنبد اور محرابیں صدیوں پرانی کہانی سنا رہے تھے۔ کچھ سال پہلے تک یہ صرف قہوہ خانہ تھا اب اس میں کئی اضافے ہو گئے تھے۔ Read more about بلیکِش (Blackish) ۔۔۔ توصیف بریلوی[...]

عزت واپسی قانون ۔۔۔ کیفی سنبھلی

قصبے کے سب سے بڑے رئیس چودھری منیر کے پاس ایک دور میں بے حساب دولت تھی۔ آدھے قصبے کا مالک وہ اکیلا تھا۔ ہاتھی نشین بھی تھا۔ جتنا بڑا رئیس، اتنا ہی بڑا عیاش اور بد کار۔ جب کوئی شخص بد کاریوں کا شکار ہو جاتا ہے تو اس کی جاگیر اور دولت خود Read more about عزت واپسی قانون ۔۔۔ کیفی سنبھلی[...]

غزلیں ۔۔۔ ڈاکٹر فریاد آزرؔ

نہ ہو گر خوفِ دوزخ اور نہ لالچ بھی ہو جنت کا بھرم کھل جائے پھر ہم جیسے لوگوں کی عبادت کا ملا تھا کل جسے رتبہ جہاں کی بادشاہت کا تماشا بن چکا ہے آج وہ خود اپنی عبرت کا خدا کو اتنے چہروں میں کیا تقسیم بندوں نے بڑی مشکل سے آتا ہے Read more about غزلیں ۔۔۔ ڈاکٹر فریاد آزرؔ[...]

غزلیں ۔۔۔ ظہیرؔ احمد

اُجلی رِدائے عکس کو میلا کہیں گے لوگ آئینہ مت دکھائیے، جھوٹا کہیں گے لوگ شاخیں گرا رہے ہیں مگر سوچتے نہیں پھر کس شجر کی چھاؤں کو سایہ کہیں گے لوگ واقف ہیں رہبروں سے یہ عادی سراب کے دریا دکھائیے گا تو صحرا کہیں گے لوگ شہرت کی روشنی میں مسلسل اُچھالئے پتھر Read more about غزلیں ۔۔۔ ظہیرؔ احمد[...]

دو دو غزلے ۔۔۔ ظہیرؔ احمد

دو غزلہ ۱ آنکھوں میں ہوں سراب تو کیا کیا دکھائی دے پانی کے درمیان بھی صحرا دکھائی دے بینائی رکھ کے دیکھ مری، اپنی آنکھ میں شاید تجھے بھی درد کی دنیا دکھائی دے دنیا نہیں نمائشِ میکانیات ہے ہر آدمی مشین کا پرزہ دکھائی دے آدم غبارِ وقت میں شاید بکھر گیا حوّا Read more about دو دو غزلے ۔۔۔ ظہیرؔ احمد[...]

غزلیں ۔۔۔ تنویر قاضی

خواب جب اُتر آئے ساحلی علاقے میں ماہی گیر گھر آئے ساحلی علاقے میں آنکھ اشک بھر آئے ساحلی علاقے میں دل کو خالی کر آئے ساحلی علاقے میں سُرخ پینگوئن ایسے منظروں سے دُھتکارے پھر نہ عمر بھر آئے ساحلی علاقے میں میتیں دِکھانے کا اہتمام کیا کرتے سب بغیر سَر آئے ساحلی علاقے Read more about غزلیں ۔۔۔ تنویر قاضی[...]

غزلیں ۔۔۔ محمد احسن سمیع راحلؔ

دل ہائے گرفتہ کو خوشا کون کہے گا اس بیعتِ قسری کو بجا کون کہے گا! سب کا ہی مفاد اور غرض زد میں ہو جس کی آمین بر ایں حرفِ دعا کون کہے گا! خائف نہ ہوں کیوں اہل چمن میری نوا سے صرصر کو بھلا باد صبا کون کہے گا! اک لفظ تسلی Read more about غزلیں ۔۔۔ محمد احسن سمیع راحلؔ[...]

انتہائے کمال سے گوشۂ جمال تک (قسط ۳) ۔۔۔ ڈاکٹر قرۃ العین طاہرہ

جمعرات کو روزہ رکھنے کی نیت اسلام آباد سے کر کے چلی تھی کہ مکہ مکرمہ میں پچھلے تینوں اسفار میں کوئی روزہ نہ رکھ سکی تھی لیکن ہوا یہ کہ ہفتے کو مدینہ منورہ جانے کا پروگرام طے پا گیا۔ میں نے سوچا اگر آج روزہ رکھ لیتی ہوں تو کل جمعہ ہے، جمعے Read more about انتہائے کمال سے گوشۂ جمال تک (قسط ۳) ۔۔۔ ڈاکٹر قرۃ العین طاہرہ[...]

ایک ناول، دو تبصرے ۔۔۔ ڈاکٹر محمد اسلم فاروقی/ متین اشرف

محسن خان کا ناول ’’اللہ میاں کا کارخانہ‘‘ ایک مطالعہ ۔۔۔ ڈاکٹر محمد اسلم فاروقی قصہ سننا یا سنانا ہر زمانے میں انسان کا محبوب مشغلہ رہا ہے۔ یہ انسان کی فطرت ہوتی ہے کہ وہ اپنے حالات دوسروں کو سنانا چاہتا ہے اور دوسروں کے حالات جاننا چاہتا ہے۔ قصہ نگاری کی اسی فطری Read more about ایک ناول، دو تبصرے ۔۔۔ ڈاکٹر محمد اسلم فاروقی/ متین اشرف[...]

اردو کی شعری و نثری اصناف ۔۔۔ ڈاکٹر محمد عبد العزیز سہیل

مصنف کتاب : پروفیسر مجید بیدار پروفیسر مجید بیدار جامعہ عثمانیہ کے ایک مقبول، فعال اور متحرک استاد اردو رہے ہیں۔ تدریسی سرگرمیوں کے علاوہ تصنیف و تالیف، نصاب کی تیاری، جامعات میں ممتحن کے فرائض انجام دینا اور دیگر فروغ اردو کاموں میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیتے ہیں۔ ان کا شمار جنوبی ہند Read more about اردو کی شعری و نثری اصناف ۔۔۔ ڈاکٹر محمد عبد العزیز سہیل[...]