اکتوبر 3, 2013

تازہ شمارہ

مجھے کہنا ہے کچھ ۔۔۔

  کس کس کو یاد کیجیے، کس کس کو روئیے۔۔۔۔ فاروقی صاحب کی جدائی کا غم تو تازہ ہی ہے اور شاید ہمیشہ رہے گا ہی، کرونا کی دوسری لہر نے مزید چرکے دئے ہیں۔ اس سہ ماہی میں مزید بڑے نام رخصت ہو گئے ہیں۔ کچھ کو ہی اس شمارے میں یاد کیا گیا Read more about مجھے کہنا ہے کچھ ۔۔۔[...]

دو نعتیں ۔۔۔ سعود عثمانی

  ہے تصور میں عہدِ نبی سامنے، اس زمانے کے پل جگمگاتے ہوئے آنکھ کے سامنے ہیں مناظر بہت، چلتے پھرتے ہوئے، آتے جاتے ہوئے   ایک چادر کو تھامے ہوئے ہیں سبھی،چاہتے ہیں سبھی آپ سے منصفی آپ کے دستِ فیصل میں سنگِ سیہ سب قبیلوں کا جھگڑا مٹاتے ہوئے   عتبہ ابن ربیعہ Read more about دو نعتیں ۔۔۔ سعود عثمانی[...]

شمیم حنفی: ایک ادبی اور تہذیبی بصیرت کا شخص ۔۔۔ سرور الہدیٰ

  1996 میں جے این یو میں میرا داخلہ ہوا اور ایک طالبِ علم کے طور پر میں نے شمیم حنفی کو پڑھنا شروع کیا۔ ایم اے کے دوران ان کی بعض تحریریں پڑھ تو گیا مگر ان سے کوئی بامعنی رشتہ قائم نہیں ہو سکا۔ میں نے ان کی پہلی تحریر ’آجکل‘ میں پڑھی Read more about شمیم حنفی: ایک ادبی اور تہذیبی بصیرت کا شخص ۔۔۔ سرور الہدیٰ[...]

غزلیں ۔۔۔ شمیم حنفی

  نیلے پیلے سیاہ سرخ سفید سب تھے شامل اسی تماشے میں یورش رنگ نے ذلیل کیا آنکھ گم ہو گئی تماشے میں   کوئی بھی ان میں چارہ ساز نہ تھا سبھی بیمار جستجو نکلے تم ہی سوچو کہ بے دلی کس سے راستہ پوچھتی تماشے میں   جسم کا سونا روپ کی چاندی Read more about غزلیں ۔۔۔ شمیم حنفی[...]

محمد علوی (سنو تو سارے منظر بولتے ہیں) ۔۔۔ شمیم حنفی

  ہمارے عہد کو علما اور مفکرین کئی ناموں سے یاد کرتے ہیں۔ کوئی اسے اضطراب کا عہد کہتا ہے، کوئی تمنا کا، کوئی بحران کا، کسی کے نزدیک یہ تغیر نو کا عہد ہے، کسی کے لئے جذبات کے فقدان کا، کسی کے لئے تجزیے کا اور کسی کے لئے عدم تعقل کا۔ الگ Read more about محمد علوی (سنو تو سارے منظر بولتے ہیں) ۔۔۔ شمیم حنفی[...]

پانی پر لکھا نام ۔۔۔ رتن سنگھ

  دریا، وقت کے بہاؤ کی طرح متواتر بہتا جا رہا ہے۔ اور میں اس کے پانی پر اپنا نام لکھنے کی بے سود کوشش کر رہا تھا۔ میرے حروف لکھے جانے سے پہلے ہی یوں مٹتے جا رہے تھے جیسے کہتے ہوں اہم اور غیر اہم کام ماضی کا حصہ بنتے ہی پگڈنڈی پر Read more about پانی پر لکھا نام ۔۔۔ رتن سنگھ[...]

سیالکوٹ کا لاڑا ۔۔۔ رتن سنگھ

  میں نے اپنی لاڑی کو بچپن میں اس وقت چن لیا تھا جب میں ماں کا دودھ پیتا بچہ تھا اور وہ لاڑی تھی ایک گوگلیانی۔ پنجاب میں گوگلیانی، راجستھان کی ان عورتوں کو کہتے ہیں جو گلی گلی، گھر گھر، سوئیاں اور کندھوئیاں بیچتی ہیں۔ یہ سوئیاں، کندھوئیاں بیچتے ہوئے انہوں نے اپنے Read more about سیالکوٹ کا لاڑا ۔۔۔ رتن سنگھ[...]

ذوقی اور تبسم- موت اور محبت کا بندھن ۔۔۔ خورشید اکرم

  کون جانتا تھا کہ ذوقی اور تبسم کی یہ باتیں جو آج بیس اور اکیس اپریل 2021 کی درمیانی شب کو میں لکھ رہا ہوں اسے ماضی کے صیغے میں لکھوں گا۔ جہاں ’ہے‘ لکھنا تھا وہاں ’تھا‘ لکھوں گا۔ رہے نام اللہ کا۔ ایک دن کے وقفے سے مشرف عالم ذوقی اور تبسم Read more about ذوقی اور تبسم- موت اور محبت کا بندھن ۔۔۔ خورشید اکرم[...]

شہسوارِ رخشِ خامہ ۔۔۔ غضنفر

  بیس برسوں میں جس تخلیق کار نے اپنی تخلیقیت کی بیس سے زیادہ بساطیں بچھا دی ہوں اور جن میں سے بیشتر بساطیں ایسی ہوں جن کے دامن میں سیکڑوں خانے موجود ہوں، اس پر اگر بسیار نویسی کا الزام عائد ہوتا ہے تو یہ کوئی تعجب کی بات نہیں۔ باطنی طینت اور ظاہری Read more about شہسوارِ رخشِ خامہ ۔۔۔ غضنفر[...]

مشرف عالم ذوقی اور علامت ۔۔۔ بشارت تنشیط

  اکیسویں صدی کی پہلی دو دہائیوں میں جن ناول نگاروں نے اپنے فن کی بدولت شہرت پائی ان میں سے ایک اہم ناول نگار مشرف عالم ذوقی ہیں۔ ذوقی صاحب کا اعجاز یہ ہے کہ انھوں نے اپنے ناولوں میں زندگی کے حقیقی رخ سے پردہ ہٹا کر نئی جہتوں کو متعارف کرایا ہے۔ Read more about مشرف عالم ذوقی اور علامت ۔۔۔ بشارت تنشیط[...]

کنڈوم کلچر اور ناول میں ثقافتی ڈسکورس (نالۂ شب گیر کے حوالے سے) ۔۔۔ ابرار مجیب

  ٹیری ساؤدرن کے ناول کینڈی کے تعلق سے بعض ناقدین نے یہ رائے دی ہے کہ امریکہ میں سیکس کا تصور کینڈی کے بعد وہی نہیں رہے گا جو تھا۔ اس بصیرت آموز تنقیدی بیان میں ناول اور کلچر کے بنیادی رشتوں کی وضاحت ہو گئی ہے۔ زمانہ اپنی نظر سے اپنے عہد کو Read more about کنڈوم کلچر اور ناول میں ثقافتی ڈسکورس (نالۂ شب گیر کے حوالے سے) ۔۔۔ ابرار مجیب[...]

نفرت کے دنوں میں ۔۔۔ مشرف عالم ذوقی

  پیارے سلیم انور عباسی کے لئے (26/11 کے نام —) ( نوٹ: خدا کو حاضر و ناظر جان کر، کہ جو کچھ یہاں بیان کیا جا رہا ہے، اس کا ایک ایک لفظ سچ پر مبنی ہے۔ ممکن ہے پہلی بار میں آپ کو یقین نہ آئے یا ممکن ہے، سارے واقعات، جو اس Read more about نفرت کے دنوں میں ۔۔۔ مشرف عالم ذوقی[...]

تبسم فاطمہ: ایک کھڑکی اسی دیوار میں کھل جائے گی ۔۔۔ مشرف عالم ذوقی

  راستہ یہاں بند ہے۔ اندھیرا بھی ہے۔ اب ہم کہاں جائیں گے تبسم؟ وہ مطمئن ہے۔۔ ایک کھڑکی اسی دیوار میں کھل جائے گی۔ اس نے میری طرف مسکرا کر دیکھا۔ دیوار میں کھڑکی کا اضافہ ہو چکا تھا۔ مومن نے کہا۔۔ تم میرے پاس ہوتے ہو گویا۔۔ جب کوئی دوسرا نہیں ہوتا۔ غالب Read more about تبسم فاطمہ: ایک کھڑکی اسی دیوار میں کھل جائے گی ۔۔۔ مشرف عالم ذوقی[...]

عورت مارچ ۔۔۔ مشرف عالم ذوقی

  پیارے ساتھی سعید احمد کی نظم عورت مارچ سے گزرتے ہوئے   ہٹ جاؤ راستے سے، عورتوں کا جلوس آ رہا ہے، انہیں جائیداد نہیں، عزت، انسانی حقوق اور تمھارے ساتھ برابری سے کھڑے ہونے کی جگہ چاہیے!! — سعید احمد   وہ آ چکی ہیں اور اس بار پوری تیاری کے ساتھ ’’وہ Read more about عورت مارچ ۔۔۔ مشرف عالم ذوقی[...]

تبسم اور میرا سچ ۔۔۔۔ مشرف عالم ذوقی

  ہم ہیں تو کہانیاں ہیں۔ ایک وقت آتا ہے جب کہانیاں پیچھے چھوٹ جاتی ہیں۔ نیما، مہک احمد اور بھی کتنے نام۔۔۔۔ یہ سب پیچھے چھوٹ گئے۔ اب ہمارا ایک ۲۵ سال کا بیٹا ہے۔ عشق ابھی بھی آواز دیتا ہے تو تبسم مسکراتی ہوئی میری آنکھوں میں اتر جاتی ہے۔ ’تم عشق سے Read more about تبسم اور میرا سچ ۔۔۔۔ مشرف عالم ذوقی[...]

چوبیس مارچ (دو نظمیں مشرف کے لئے) ۔۔۔ تبسم فاطمہ

  مشرف کی سالگرہ کے موقع پر ایک نظم   تم کو دیکھنے کا نظریہ بدل دیا ہے خود کو دیکھتی ہوں اور سوچتی ہوں کہ طلب سے آگے بھی کوئی طلب ہوتی تو یہ تم ہوتے۔۔ صرف تم تمہاری دھوپ پر سایہ بن جاتی تمہاری آنکھوں کے اس پار چھپی ساری حیرت کو لے Read more about چوبیس مارچ (دو نظمیں مشرف کے لئے) ۔۔۔ تبسم فاطمہ[...]

سدرا سحر عمران کی نظمیں ۔۔۔ تبسم فاطمہ

  سدرا سحر عمران کی نظمیں آپ پڑھیں تو انقلابی شاعر مخدوم سے لے کر سارا شگفتہ اور باغی لب و لہجے کی شاعرہ کشور ناہید اور فہمیدہ ریاض تک کی نظموں کی یاد تازہ ہو جاتی ہے۔ پھر سوال اٹھتا ہے، تو اس میں نیا کیا ہے؟ در اصل پہلی بات تو یہ ہے Read more about سدرا سحر عمران کی نظمیں ۔۔۔ تبسم فاطمہ[...]

زہراب ۔۔۔ تبسم فاطمہ

  وہ پارک میں ملی تھی۔ لیکن شبھا کے لئے صرف اتنا کہنا کافی نہیں ہے کہ وہ پارک میں ملی تھی۔ اس میں کئی ایسی خوبیاں تھیں، جس نے مجھے اس کے قریب آنے اور اسے سمجھنے پر مجبور کیا تھا۔ ریور سائیڈ پارک میں اس دن میں اکیلی تھی۔ عام طور پر میں Read more about زہراب ۔۔۔ تبسم فاطمہ[...]

نظمیں ۔۔۔ تبسم فاطمہ

  اپنے بیٹے ساشا کی سالگرہ کے موقع پر   شہزادے تم خوابوں سے نکل کر زندگی میں آئے ابھی تم نے ننھے ننھے قدموں سے چلنا سیکھا تھا کہ اچانک تم بڑے ہو گئے تم ان سب سے مختلف تھے جنہیں میری آنکھیں دیکھ رہی تھیں تاریخ سے لے کر آج تک تم سب Read more about نظمیں ۔۔۔ تبسم فاطمہ[...]

ترنم ریاض کی تلخ حقیقت۔ افسانہ نگاری کے حوالے سے ۔۔۔ شوکت احمد صوفی

  ترنم ریاض تخلیقی جہت کی مالک ہیں جن کے اظہارخیال کا ایک میدان افسانہ بھی ہے، مگر اُن کی ذات میں قصہ گوئی کا فطری جوہر، زرخیز تخیل، وسعت مطالعہ کے سبب واقعے اور آدمی کو پرکھنے اور معاملے کی تہہ تک پہنچنے کی صلاحیت اور سب سے بڑھ کر یہ کہ اُن کے Read more about ترنم ریاض کی تلخ حقیقت۔ افسانہ نگاری کے حوالے سے ۔۔۔ شوکت احمد صوفی[...]

خواتین اُردو ادب میں تانیثی رجحان (مغربی تانیثیت کے پس منظر میں) ۔۔۔ ترنّم ریاض

  تانیثیت (Feminism) بحیثیتِ نظریہ (Ideology) مغرب کی دین ہے۔ تانیثیت کی تحریک تقریباً دو سو برس کا سفرطے کرتے ہوئے اب ایک مسلمہ حقیقت کی صورت ہمارے سامنے ہے۔ تاریخ کے مختلف ادوار سے گزر کر تانیثیت اپنے مختلف رنگوں کے ساتھ دُنیا بھر میں ایک ٹھوس نظریے کی حیثیت سے قبولیت کا شرف Read more about خواتین اُردو ادب میں تانیثی رجحان (مغربی تانیثیت کے پس منظر میں) ۔۔۔ ترنّم ریاض[...]

شام کی نظمیں ۔۔۔ ترنم ریاض

  پردیس کا شہر   یہ سرمئی بادلوں کے سائے، یہ شام کی تازہ تازہ سی رت یہ گاڑیوں کی کئی قطاریں یہ باغ میں سیر کرتے جوڑے یہ بچوں کے قہقہے سریلے وہ دور سے کوکتی کویلیا یہ عکس پانی میں بجلیوں کا چہار جانب ہے شادمانی مگر میں ہوں بے قرار مضطر نہیں Read more about شام کی نظمیں ۔۔۔ ترنم ریاض[...]

یمبرزل ۔۔۔ ترنم ریاض

  اس انجام کا خدشہ سب کو تھا مگر اس کی توقع کسی کو نہیں تھی۔ ماں اس پر یقین کرنے کو تیار نہیں تھی۔ باپ اسے قبول نہیں کرپا رہا تھا۔ یاور ایسا سوچ بھی نہیں سکتا تھا۔ اور انیقہ۔۔۔   "نِکی باجی۔۔۔ یہ الجیبرا مجھے ضرور فیل کرے گا۔۔۔ ” یوسف نے پھرن Read more about یمبرزل ۔۔۔ ترنم ریاض[...]

تلاشِ مشکِ شگفتگی ۔۔۔ غضنفر

  دہلی کی ادبی محفلوں میں کچھ لوگ طول طویل مقالے پڑھ کر اور لمبی چوڑی تقریریں فرما کر بھی اپنی موجودگی کا احساس نہیں دلا پاتے وہیں ایک شخص ایسا بھی ہے جو محفل میں ٹھیک سے دکھائی بھی نہیں دیتا، محض دو ایک مختصر جملے بول کر بھی اپنے ہونے کا ادراک کرا Read more about تلاشِ مشکِ شگفتگی ۔۔۔ غضنفر[...]

غزلیں ۔۔۔ عنبر بہرائچی

  شب خواب کے جزیروں میں ہنس کر گزر گئی آنکھوں میں وقت صبح مگر دھول بھر گئی   پچھلی رتوں میں سارے شجر بارور تو تھے اب کے ہر ایک شاخ مگر بے ثمر گئی   ہم بھی بڑھے تھے وادیِ اظہار میں مگر لہجے کے انتشار سے آواز مر گئی   تجھ پھول Read more about غزلیں ۔۔۔ عنبر بہرائچی[...]

نظمیں ۔۔۔ عنبر بہرائچی

  ایک ریاضت یہ بھی   وہی دریا کنارے روز اپنی بانس کی بنسی لیے بیٹھا ہوا وہ شخص کتنی بے نیازی سے ہر اک لمحہ کو اپنی خوش دلی سے داد دیتا ہے کہ جس کے روئے روشن پر قناعت مورچھل جھلتی ہوئی موتی لٹاتی ہے سحر تا شام لہروں سے وہ اپنی بات Read more about نظمیں ۔۔۔ عنبر بہرائچی[...]

نظمیں ۔۔۔ پریاگ شُکل، ہندی سے ترجمہ: اعجاز عبید

  پانی کے ساتھ پانی ہوں   پانی کے ساتھ پانی ہوں کھیتوں تک اسے لاتا ہوا بیج کے ساتھ بیج ہوں اسے اگاتا ہوا ہوا کے ساتھ ہوا ہوں فصل کے ساتھ لہراتا ہوا۔ دھوپ کے ساتھ دھوپ ہوں دھان پکاتا ہوا۔ ٹھنڈ کے ساتھ ٹھنڈ ہوں پہرے پر جاتا ہوا۔ دن ہوں رات Read more about نظمیں ۔۔۔ پریاگ شُکل، ہندی سے ترجمہ: اعجاز عبید[...]

علم و کتاب: مولانا آزاد ۔۔۔ عبد الماجد دریابادی

  (مولانا دریابادیؒ کا یہ نشریہ لکھنؤ ریڈیو اسٹیشن سے مئی ۱۹۶۵ء میں نشر ہوا۔ اس میں مولانا نے مولانا ابو الکلام آزاد کی انشا پردازی کو خراج عقیدت پیش کیا ہے اور ان کی علمی و ادبی عظمت کا اعتراف کیا ہے، مجموعہ خطوط ’’غبار خاطر‘‘ بالخصوص مولانا کے نقد و تبصرہ کا محور Read more about علم و کتاب: مولانا آزاد ۔۔۔ عبد الماجد دریابادی[...]

اقبال کے تضادات ۔۔۔ ڈاکٹر رؤف خیر

  فکر و فن میں تبدیلی کے ساتھ فن کار کا فکری گراف بھی اونچ نیچ کا شکار ہو تو یہ کوئی تعجب کی بات نہیں قرآن وسنت سے تو ثابت ہے کہ ایمان بھی گھٹتا بڑھتا رہتا ہے نیکو کاروں کی صحبت میں مومن کا ایمان بڑھ جاتا ہے اور اگر بدکاروں کی صحبت Read more about اقبال کے تضادات ۔۔۔ ڈاکٹر رؤف خیر[...]

خاک خمیر کی تخلیقی کائنات ۔۔۔ سلیم انصاری

  انسانی تاریخ کے لا محدود سفر میں عشق ایک ازلی اور ابدی حقیقت ہے اور ہجر و وصل ایک فطری تجربہ۔ عشق کے بغیر کائنات کی ترسیل و ترویج اور تفہیم کا تصور ہی ممکن نہیں۔ لہٰذا انسانی زندگی کے ہر شعبۂ حیات میں عشق کی کار فرمائی اور اس کے محرکات و ممکنات Read more about خاک خمیر کی تخلیقی کائنات ۔۔۔ سلیم انصاری[...]

مجید امجد کی شاعری میں کَونیاتی اور سائنسی وژن ۔۔۔ شاہد ماکلی

  سائنس اور شاعری میں کئی باتیں مشترک ہیں۔ جیسا کہ شاعر اور سائنس دان ناربرٹ ہرسکارن (Norbert Hirschhorn) نے اپنے مضمون ’’جدید شاعری، جدید سائنس۔۔۔۔ ساخت، استعارہ اور مَظاہر‘‘ میں لکھا ہے: ’’شاعری اور سائنس کے درمیان گہرا تعلق ہے۔ دونوں ایک دوسرے سے مربوط ہیں، کیوں کہ دونوں کائنات اور انسانی بقا کی Read more about مجید امجد کی شاعری میں کَونیاتی اور سائنسی وژن ۔۔۔ شاہد ماکلی[...]

سید محمد اشرف کی ناول نگاری : امتیازات و خصوصیات ۔۔۔ صدام حسین

  سید محمد اشرف کے فکشن کے تعلق سے میں پروفیسر سیما صغیر صاحبہ کی اس رائے سے پوری طرح اتفاق کرتا ہوں : ’’سید محمد اشرف میرے پسندیدہ ادیب ہیں۔پہلی وجہ یہ کہ ان کی ہر تخلیق کی قرأت قاری کو یکسوئی سے اپنی گرفت میں لے لیتی ہے۔ وہ تہذیبی، تمدنی، ثقافتی، لسانی Read more about سید محمد اشرف کی ناول نگاری : امتیازات و خصوصیات ۔۔۔ صدام حسین[...]

اسد محمد خان کی چند مختصر نظمیں

  (بشکریہ کامران نفیس)   گاربیج کلکٹر ____________________________   رات کو سونے سے پہلے اپنے سارے گیت لکھ لو اپنی ساری نظموں کا املا ٹھیک کر لو صبح کو شاید کفن لے کر مورخ آئے گا رام بابو سکسینہ آئے گا ٭٭ دس از اَ رکارڈِنگ ____________________________   گنا پیلتے ہوئے اور رہٹ چلاتے ہوئے Read more about اسد محمد خان کی چند مختصر نظمیں[...]

ہمیں تو ہیں وہ ۔۔۔ سعود عثمانی

  (میں نے امنڈتے خون کے ساتھ وہ منظر دیکھا جس میں چند سالہ نہتا بچہ مسلح فوجی کی آنکھوں میں آنکھیں ڈال کر کھڑا ہوا ہے۔ اس کی آنکھوں میں خون ہے لیکن خوف کا نشان تک نہیں۔ یہ اس کے آباء کی وراثت ہے جو اس تک نسل در نسل منتقل ہوتی آئی Read more about ہمیں تو ہیں وہ ۔۔۔ سعود عثمانی[...]

عبدالوہاب البیاتی کے ساتھ ایک شام ۔۔۔ شاہین

  ہر گلی کوچے میں لاش اپنی اٹھائے رات آتے ہی کسی اک بالاخانے پر جہاں سائے برہنہ تن کو ڈھانپے ناچتے ہیں یا کہیں اک پارک میں یا پھرکسی نکڑ پہ واقع قہوہ خانے کے دھوئیں میں دفن کر آتے ہو خود کو اپنے چہرے کو چھپائے شرم کے مارے خدا اور عائشہ و Read more about عبدالوہاب البیاتی کے ساتھ ایک شام ۔۔۔ شاہین[...]

وینٹی لیٹر ۔۔۔ فرزانہ نیناں

  جب اڑی جا رہی تھیں یہ زلفیں ان ہواؤں میں گیت تھے اُس کے میرے چہرے پہ تھی ہنسی اس کی کھکھلاتے تھے راہ کے کانٹے چاند پر گھومتے تھے ہم اکثر زندگی پر بھی کچھ بھروسا تھا جانے کس لمحے پڑ گئی وہ شکن ساری دنیا بدل گئی جس میں ایک گہری سی Read more about وینٹی لیٹر ۔۔۔ فرزانہ نیناں[...]

نظمیں ۔۔۔ تنویر قاضی

  وبا کے دنوں کی تنہائی ____________________________   کائیناتی بھید پانے اور مرضی کی دیر پا قُربت کے لئے سوشل ڈِسٹینسنگ کا تجربہ ضروری ہے تنہائی ایک قیمتی شَے ہے جہاں محبت صحیح معنوں میں آشکار ہوتی ہے خواب در خواب بھی تو سفر جاری رہتا ہے شکیب جلالی، سارہ شگفتہ اور ثروت حسین کو Read more about نظمیں ۔۔۔ تنویر قاضی[...]

فیس بک کا موت سے رشتہ ابھی نیا ہے ۔۔۔ ڈاکٹر ثروت زہرا

  موت نے کوئے ابد سے آ کے خاموشی سے ٹائم لائن پر جگہ بنا لی آئکن۔۔۔۔۔۔ اپنی شکل پہ رکھے جذبوں کی تصویر بنانا بھول گئے ہیں ہند سے۔۔۔۔ لا متناہی گنتی گننے چلے گئے ہیں جلتی بجھتی تصویروں کے سب انگارے راکھ میں ڈھل کر اسٹیٹس کو ڈھانپ چکے ہیں حرف کی دھڑکن Read more about فیس بک کا موت سے رشتہ ابھی نیا ہے ۔۔۔ ڈاکٹر ثروت زہرا[...]

نظمیں ۔۔۔ عارفہ شہزاد

  کتھارسس ¬____________________________   دباؤ، دباؤ کوئی اندرونی دباؤ رگوں کا کھنچاؤ میری کنپٹی کی کوئی رگ دبی ہے یا کچھ بھی نہیں ہے! حلق میں اٹکنے لگی سانس میری کہیں جھنجھناتے ہوئے لفظ چبھنے لگے ہیں میری کلائی سے۔۔ ۔ کاندھے سے۔۔ ۔ باندھی ہوئی ایک اک رگ میں پیوست بس درد ہے اور Read more about نظمیں ۔۔۔ عارفہ شہزاد[...]

صدر کی اجازت سے ۔۔۔ عبیرہ احمد

  پر شکوہ، با تمکیں، خوش خبر، سُخن آثار بزمِ شعر گویاں کے بے شریک منصب دار صاحبِ صدارت کے ساتھ کچھ مصاحب ہیں اولیں صفوں میں کچھ شہر کے چنیدہ لوگ پہلی پہلی کاوش پر طالبِ پذیرائی شاعرہ جھجکتی ہے ملتجی نگاہوں سے دھیمے دھیمے پڑھتی ہے ’’صدر کی اجازت سے ‘‘ صدر کے Read more about صدر کی اجازت سے ۔۔۔ عبیرہ احمد[...]

نظمیں ۔۔۔ کاوش عباسی

  بیچ سمندر ____________________________   جَیسے بیچ سمندر، دُور کہیں پر کوئی کسکتا ڈُوبتا آدمی کُچھ میوزک کی چُپ آوازیں دِل کو رُلاتی رہتی ہَیں وقت ہمارا غم و غُصّہ کا اُلجھا مُرقّع اِن آوازوں ہی میں لرزاں رہتا تھا ہم کِس کِس رُخ کے مسافر دونوں کِس کِس سمت کے ساتھی تھے یہ کَیسا Read more about نظمیں ۔۔۔ کاوش عباسی[...]

خوف گنبد میں روشن آنکھیں ۔۔۔ شائستہ فاخری

  ’’سورج طلوع ہوتے ہی اس کی پہلی کرن کے ساتھ اس بد چلن کو سنگسار کر دیا جائے۔ جو جتنے پتھر اس پر پھینکے گا اس انسان کے اتنے ہی گناہ معاف ہوں گے۔‘‘ سرغنہ کے اس فرمان کے جاری ہوتے ہی بھیڑ نے اپنے گناہوں کی معافی کے لئے چھوٹے بڑے پتھروں کو Read more about خوف گنبد میں روشن آنکھیں ۔۔۔ شائستہ فاخری[...]

لذّت ۔۔۔ ایم مبین

  بھولا کے اسٹال پر اس دن معمول سے زیادہ بھیڑ تھی۔ اسے بھولا کے اسٹال پر بھیڑ دیکھ کر الجھن سی ہوئی۔ اس نے اپنے کلائی میں بندھی قیمتی گھڑی دیکھی اور ذہن میں حساب لگانے لگا کہ بھولاسے پاؤ بھاجی لے کر کھانے میں اسے کتنا وقت لگے گا اور اس کے پاس Read more about لذّت ۔۔۔ ایم مبین[...]

ایک چاقو کا فاصلہ ۔۔۔ توصیف بریلوی

  عصمت چغتائی پر صد سالہ عالمی سیمینار کا آخری دن تھا۔ آڈیٹوریم فکشن نگاروں، نقادوں، پروفیسروں، ریسرچ اسکالروں، فیمنسٹوں، کمیونسٹوں، سوشلسٹوں اور صحافیوں کے علاوہ دیگر دیسی اور بدیسی ادیبوں سے بھرا ہوا تھا۔ ایک سے بڑھ کر ایک مضمون اور خاکے پڑھے گئے، تقریریں بھی بڑی پر جوش ہوئیں۔ کچھ فیمنسٹوں نے تو Read more about ایک چاقو کا فاصلہ ۔۔۔ توصیف بریلوی[...]

چالاک تر، بے باک تر ۔۔۔ عمار نعیمی

  وہ اپنے زمانے کا سب سے بڑا عالم تھا۔ اسے تمام فلسفہ اور عقلی علوم کا بادشاہ تسلیم کیا جاتا تھا۔ اس کے معتقدین کی تعداد لاتعداد تھی۔ اپنے علمی و عقلی علوم کے سبب اس نے اپنے خطے میں انقلاب برپا کر دیا تھا۔ اس کے مقتدیان نے اپنے اذہان میں اس کا Read more about چالاک تر، بے باک تر ۔۔۔ عمار نعیمی[...]

مسز زمان ۔۔۔ شکیل خورشید

  ’’زمان نہیں رہے‘‘ مسز زمان نے شدتِ جذبات سے لرزتی آواز میں فون پر اسے بتایا۔ اور اس کے ذہن میں بیتے دنوں کی یادیں در آئیں۔ **** زمان کے ساتھ اس کے خاندانی مراسم، دوستی، بے تکلفی اور احترام، ہر طرح کا رشتہ تھا۔ تقریباً دس گیارہ سال قبل ایک دن زمان نے Read more about مسز زمان ۔۔۔ شکیل خورشید[...]

غزلیں ۔۔۔ ستیہ پال آنند

  چیز چمکیلی سی بیٹھی تھی مرے پھن میں تنی سنگ اسود کا کوئی ٹکڑا تھا یا پارس منی   کھٹکھٹائیں کس کا در اس شہر کے دریوزہ گر گانٹھ کے پکے ہیں دونوں، شوُم کیا اور کیا غنی   اک زمرد اب اگلنا ہی پڑے گا وقت پر بھول سے وہ کیوں نگل بیٹھی Read more about غزلیں ۔۔۔ ستیہ پال آنند[...]

غزلیں ۔۔۔ ڈاکٹر رؤف خیرؔ

  کوئی امید کسی سے نہ گلہ رکھتے ہیں بے نیازانہ جو جینے کی ادا رکھتے ہیں   ہم مریضان تجاہل کو خفا رکھتے ہیں دُکھتی رگ پر کبھی انگلی جو ذرا رکھتے ہیں   جذبہ و شوق شہادت تو وہ کیا رکھتے ہیں جیب میں جان بچانے کی دوا رکھتے ہیں   بد گمانی Read more about غزلیں ۔۔۔ ڈاکٹر رؤف خیرؔ[...]

غزلیں ۔۔۔ ڈاکٹر فریاد آزرؔ

  حصۂ درد وراثت سے زیادہ ہی ملا یعنی مجھ کو مری قسمت سے زیادہ ہی ملا   غم زمانے کا ذرا سا ہی خریدا تھا مگر مال مجھ کو مری قیمت سے زیادہ ہی ملا   وہ سیاست نے دیا ہو کہ محبت نے تری زخم اس دل کو ضرورت سے زیادہ ہی ملا Read more about غزلیں ۔۔۔ ڈاکٹر فریاد آزرؔ[...]

غزل ۔۔۔ سعید

  کبھی طلب، کبھی وحشت، کبھی نمُو نے مری مجھے کہیں کا بھی رکھا نہ جُستجو نے مری   وہ ہاتھ جس کا دلاسہ ہی میرا سب کچھ تھا بکھر چکا ہوں تو آیا ہے خاک چھُونے مری   کوئی نصاب نہ مکتب جو بھید کھول سکا وہ عشق کھولا ہے مجھ پر کتاب رُو Read more about غزل ۔۔۔ سعید[...]

غزلیں ۔۔۔ پریتپال سنگھ بیتاب

  سال گزشتہ کے نام ایک غزل بروز ۳۱ دسمبر ۲۰۲۰   میں چھوڑ آیا ہوں پیچھے بے شک دیارِ رفتہ مگر نہیں چھوڑتا مُجھے یہ خمارِ رفتہ   قدم بڑھاؤں گا آگے رستہ نظر تو آئے چھٹا کہاں ہے ابھی تلک یہ غبارِ رفتہ   میرے پروں کو نہیں وہ پرواز بننے دیتا لدا Read more about غزلیں ۔۔۔ پریتپال سنگھ بیتاب[...]

غزل ۔۔۔ نجمہ ثاقب

  جھیل سی آنکھوں میں کوئی آبپارہ ڈھونڈتے تیرنے کو آبپارے میں شکارا ڈھونڈتے   تند تھی بحری ہوا اور بادباں کھلتے نہ تھے رات عرشے پر رہے قطبی ستارہ ڈھونڈتے   شب کے منظر میں کوئی بھی دلکشا صورت نہیں رتجگوں میں ورنہ کوئی ماہ پارہ ڈھونڈتے   موج دریا بن کے جا پھنستے Read more about غزل ۔۔۔ نجمہ ثاقب[...]

غزلیں ۔۔۔ محمد احمدؔ

  نظر سے گُزری ہیں دسیوں ہزار تصویریں سجی ہیں دل میں فقط یادگار تصویریں   مری کتاب اٹھا لی جو دفعتاً اُس نے گِریں کتاب سے کچھ بے قرار تصویریں   میں نقش گر ہوں، تبسّم لبوں پہ رکھتا ہوں مجھے پسند نہیں سوگوار تصویریں   بس اک لفافہ! اثاثہ حیات کا؟ کیسے؟ بس Read more about غزلیں ۔۔۔ محمد احمدؔ[...]

غزلیں ۔۔۔ سلیمان جاذب

  نظروں سے کسی کو بھی گراتے نہیں جاناں ہر بات رقیبوں کو بتاتے نہیں جاناں   رہتے ہیں وہ مرجھائے ہوئے موسمِ گل میں جو لوگ کبھی ہنستے ہنساتے نہیں جاناں   ہر پل تری آنکھیں تری خوشبو ہے مرے ساتھ یہ بات مگر سب کو بتاتے نہیں جاناں   اَٹ سکتا ہے تیرا Read more about غزلیں ۔۔۔ سلیمان جاذب[...]

غزل ۔۔۔ اصغرؔ شمیم

  جو بات دل میں ہے رہ رہ کے سب کہے جائیں ’’دعا کے دن ہیں مسلسل دعا کئے جائیں‘‘   یہ سوچتے ہیں یہ منزل قریب ہی ہوگی جہاں تلک یہ چلے راستہ، چلے جائیں   اندھیرا ہم کو نگل لے کہ اس سے پہلے ہم بجھے چراغ کو کچھ روشنی دئے جائیں   Read more about غزل ۔۔۔ اصغرؔ شمیم[...]

غزلیں ۔۔۔ جلیل حیدر لاشاری

  کیسی بخشش کا یہ سامان ہوا پھِرتا ہے شہر سارا ہی پریشان ہوا پھِرتا ہے   کیسا عاشق ہے تیرے نام پہ قرباں ہے مگر تیری ہر بات سے انجان ہوا پھِرتا ہے   ہم کو جکڑا ہے یہاں جبر کی زنجیروں نے اب تو یہ شہر ہی زندان ہوا پھِرتا ہے   اپنے Read more about غزلیں ۔۔۔ جلیل حیدر لاشاری[...]

غزل ۔۔۔ عاطف ملک

  شوق اب وحشت میں داخل ہو رہا ہے خستگی میں لطف حاصل ہو رہا ہے   زخم کھائے دل کی طاقت ہی عجب ہے سینہِ خنجر بھی گھائل ہو رہا ہے   جس کی غم خواری متاعِ جاں تھی میری وہ ستم کاروں میں شامل ہو رہا ہے   اک قیامت ٹوٹنے والی ہے Read more about غزل ۔۔۔ عاطف ملک[...]

ماسک کی نام رکھائی ۔۔۔ رفیعہ نوشین

  مارچ 2021 کا دور۔ کورونا وائرس کی وبا نے قیامت صغریٰ کا منظر برپا کر رکھا ہے۔ کہیں لاک ڈاؤن، کہیں کرفیو تو کہیں دفعہ 144 کا نفاذ- لوگ گھروں میں مقید ہیں۔ عوام الناس کے لئے تفریح، خبریں، اور باہر کی دنیا سے تعلق بنائے رکھنے کا واحد ذریعہ موبائل فون اور انٹرنیٹ Read more about ماسک کی نام رکھائی ۔۔۔ رفیعہ نوشین[...]

انتہائے کمال سے گوشۂ جمال تک (قسط ۵) ۔۔۔ قرۃ العین طاہرہ

سفر نامہ عمرہ قسط ۵   زیارات سے واپسی پر نمازِ ظہر سے پہلے مسجد نبویﷺ میں پہنچ چکے تھے۔ شاہد گائیڈ کو کہہ چکے تھے کہ بس میں رکھے گئے کھجوروں کے دونوں ڈبے ہوٹل مونا کے مرکزی استقبالیہ پر پہنچا دے۔ یہ کھجوریں مسجد قبلتین کے باہر کھڑے ایک ٹرک سے خریدی گئی Read more about انتہائے کمال سے گوشۂ جمال تک (قسط ۵) ۔۔۔ قرۃ العین طاہرہ[...]