اکتوبر 3, 2013

تازہ شمارہ

مجھے کہنا ہے کچھ…….

آج میرا کچھ کہنے کو جی نہیں چاہ رہا۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ پس تحریر: اس سہ ماہی عرصے میں کئی احباب داغ مفارقت دے گئے، کس کس کو یاد کیجیے، کس کس کو روئیے۔ پچھلا شمارہ ترتیب ہو ہی چکا تھا کہ کراچی سے لیاقت علی عاصم کے بچھڑنے کی خبر آ گئی، Read more about مجھے کہنا ہے کچھ…….[...]

کب تک مِرے مولا ۔۔۔ شاذ تمکنت

اِک حرفِ تمنّا ہوں، بڑی دیر سے چُپ ہوں کب تک مرے مولا   اے دِل کے مکیں دیکھ یہ دل ٹوٹ نہ جائے کاسہ مرے ہاتھوں سے کہیں چھوٹ نہ جائے مَیں آس کا بندہ ہوں بڑی دیر سے چُپ ہوں کب تک مرے مولا   سر تا بقدم اپنی مرادوں کو سنبھالے جاتے Read more about کب تک مِرے مولا ۔۔۔ شاذ تمکنت[...]

شاکر میرٹھی ۔۔۔ عابد رضا بیدار

پیارے لال شاکرؔ میرٹھی باشندہ میرٹھ۔ شاگرد حضرت شوکت میرٹھی، مذہباً عیسائی۔۔ ۔۔ ۔۔ ۔۔ ۔ مدتوں منشی راے نظر سے دوستی اور رفاقت رہی اور کلام میں بھی ان سے مشورہ کرتے رہے۔ پیدائش میرٹھ میں ۱۳مارچ ۱۸۸۰ ء کو ہوئی، ۲۰ فروری ۱۹۵۶ء کو وفات پائی۔ قبر پہاڑ گنج دہلی کے مسیحی قبرستان Read more about شاکر میرٹھی ۔۔۔ عابد رضا بیدار[...]

تاریک راہیں ۔۔۔ ڈاکٹر علی دوست بلوچ/ دیوی ناگرانی

  بلوچی کہانی وہ آج پھر بلیک بورڈ کے سامنے کھڑا تھا۔ شاید اپنے انداز میں نا مکمل تصویر میں رنگ بھرتے ہوئے اپنے بہت سے شاگرد ساتھیوں کو اپنے تخلیقی آرٹ کے بارے میں بتا رہا تھا۔ ماسٹر کریم بخش جب کلاس میں داخل ہوئے تو ان کے سامنے بلیک بورڈ پر عجیب و Read more about تاریک راہیں ۔۔۔ ڈاکٹر علی دوست بلوچ/ دیوی ناگرانی[...]

یادیں ۔۔۔ ڈاکٹر بلند اقبال

(بلند اقبال نے ان مختصر اظہاریوں کے ذریعے اپنے والد مرحوم حمایت علی شاعرؔ کو یاد کیا تھا، جو فیس بک پر پوسٹ کیے گئے تھے۔ ان کو ترتیب دے کر یہاں شائع کیا جا رہا پے )   کتبہ ________________   فون آیا تھا ۔۔۔۔ پکرنگ کے قبرستان سے پوچھ رہی تھی کوئی چینی Read more about یادیں ۔۔۔ ڈاکٹر بلند اقبال[...]

روحوں کی دعوت ۔۔۔ الیگزنڈر پشکن/ مترجم نا معلوم

(مرسلہ: فرخ منظور)   آدریان پروخوروف کے گھر کا سارا ساز و سامان جنازہ لے جانے والی گاڑی پر لد چکا تھا۔ مریل گھوڑے چوتھی دفعہ بسمانیا سے نکتسکایا سڑک کی طرف چلے جہاں اس نے نیا مکان خریدا تھا۔ تابوت ساز نے دکان مقفل کر باہر دروازہ پر اس اعلان کی تختی لٹکا دی Read more about روحوں کی دعوت ۔۔۔ الیگزنڈر پشکن/ مترجم نا معلوم[...]

حمایت علی شاعر: اک جبرِ وقت ہے کہ سہے جا رہے ہیں ہم ۔۔۔۔ امجد اسلام امجد

ساری اُردو دنیا کے لیے حمایت علی شاعر اور ہمارے ادبی حلقوں کے حمایت بھائی بھی ایک خاصی طویل علالت کے بعد اُس علاقے کی طرف رجعت کر گئے جہاں ہر ذی روح انسان کے نام کی تختی اُس کا انتظار کر رہی ہے دیکھنے والی بات صرف یہ رہ جاتی ہے کہ آپ جب Read more about حمایت علی شاعر: اک جبرِ وقت ہے کہ سہے جا رہے ہیں ہم ۔۔۔۔ امجد اسلام امجد[...]

حمایت علی شاعر: تحمل اور تجسس کے احساس کا شاعر ۔۔۔ عطا محمد تبسم

اک جبر وقت ہے کہ سہے جا رہے ہیں ہم۔ اور اس کو زندگی بھی کہے جا رہے ہیں ہم وقت کا جبر جھیل کر حمایت علی شاعر بھی رخصت ہو گئے۔ اردو شاعری کو ان کے شعروں نے نئی جہت اور نئے افکار دیئے ، فیض احمد فیض نے حمایت علی شاعر کی شاعری Read more about حمایت علی شاعر: تحمل اور تجسس کے احساس کا شاعر ۔۔۔ عطا محمد تبسم[...]

آئینہ در آئینہ ۔۔۔ حمایت علی شاعر

اس بار وہ ملا تو عجب اس کا رنگ تھا الفاظ میں ترنگ نہ لہجہ دبنگ تھا اک سوچ تھی کہ بکھری ہوئی خال و خط میں تھی اک درد تھا کہ جس کا شہید انگ انگ تھا اک آگ تھی کہ راکھ میں پوشیدہ تھی کہیں اک جسم تھا کہ روح سے مصروف جنگ Read more about آئینہ در آئینہ ۔۔۔ حمایت علی شاعر[...]

ید بیضا ۔۔۔ حمایت علی شاعر

مری ہتھیلی کے سانپ کب تک ڈسیں گے مجھ کو مری ہتھیلی کے سانپ جو اب مری رگوں میں اتر چکے ہیں بدن کو زنجیر کر چکے ہیں میں خواب دیکھوں تو کوئی آنکھوں پہ ہاتھ رکھ دے قدم اٹھاؤں تو کوئی میرے قدم پکڑے پلٹ کے دیکھوں تو کوئی پیچھے نہ کوئی آگے بس Read more about ید بیضا ۔۔۔ حمایت علی شاعر[...]

حریف وصال ۔۔۔ حمایت علی شاعر

عجیب شب تھی جو ایک پل میں سمٹ گئی تھی عجیب پل تھا جو سال ہا سال کی مسافت پہ پرفشاں اس کے سائے میں ایک موسم ٹھہر گیا تھا (کسی کے دل میں تھا کیا کسی کو خبر نہیں تھی) بس ایک عالم سپردگی کا بس ایک دریائے تشنگی تھا کہ جس کی موجیں Read more about حریف وصال ۔۔۔ حمایت علی شاعر[...]

غزلیں ۔۔۔ حمایت علی شاعر

بدن پہ پیرہن خاک کے سوا کیا ہے مرے الاؤ میں اب راکھ کے سوا کیا ہے   یہ شہر سجدہ گزاراں دیار کم نظراں یتیم خانۂ ادراک کے سوا کیا ہے   تمام گنبد و مینار و منبر و محراب فقیہ شہر کی املاک کے سوا کیا ہے   کھلے سروں کا مقدر بہ Read more about غزلیں ۔۔۔ حمایت علی شاعر[...]

نند کشور وکرم: منزل ایک بلندی پر… ۔۔۔ مشرف عالم ذوقی

(یہ خاکہ نند کشور وکرم کی حیات میں لکھا گیا تھا)   منزل ایک بلندی پر اور ہم بنا لیتے عرش سے پرے ہوتا کاش کہ مکاں اپنا غالب کے اس شعر کی حقیقت 1985 میں اس وقت کھل کر سامنے آئی جب میں پہلی بار نند کشور وکرم سے ملا۔ یہ وہی سال تھا Read more about نند کشور وکرم: منزل ایک بلندی پر… ۔۔۔ مشرف عالم ذوقی[...]

ایک اور سیتا – افسانہ از نند کشور وکرم

وقت کے سفاک ہاتھوں نے کچھ ایسا ظلم ڈھایا کہ سیتا پاکستان میں رہ گئی اور رام ہجرت کر کے ہندوستان چلے گئے۔ عجیب بن باس تھا جو رام کو سیتا کے بغیر اکیلے کاٹنا پڑا۔ اور کیسے لمحات جدائی تھے ، کیسی ہجر کی گھڑیاں تھیں کہ سیتا دکھ جھیلنے کے لئے وہیں رہ Read more about ایک اور سیتا – افسانہ از نند کشور وکرم[...]

منتخب غزلیں ۔۔۔ نثار ناسک

اس سے پہلے کہ مجھے وقت علیحدہ رکھ دے میرے ہونٹوں پہ مرے نام کا بوسہ رکھ دے   حلق سے اب تو اترتا نہیں اشکوں کا نمک اب کسی اور کی گردن پہ یہ دنیا رکھ دے   روشنی اپنی شباہت ہی بھلا دے نہ کہیں اپنے سورج کے سرہانے مرا سایہ رکھ دے Read more about منتخب غزلیں ۔۔۔ نثار ناسک[...]

لائیک ویک ۔۔۔ نثار ناسک

ماں مجھے لوری سنا لوری جو تیرا فرض ہے اور بیس برسوں سے ترے ہونٹوں پہ میرا فرض ہے   بیس برسوں سے میں سکھ کی نیند سو پایہ نہیں میرے زخمیدہ پپوٹوں کو کسی لمحے نے سہلایا نہیں میرے چاروں سمت ٹھہری رات جلتی جنگ کے میدان میں لاشوں پٹے کھلیان ہیں رستوں بھرے Read more about لائیک ویک ۔۔۔ نثار ناسک[...]

لیاقت علی عاصم کے شعری مجموعے سے ایک انتخاب ۔۔۔ عزیز نبیل

سن 2008ء میں لیاقت علی عاصم بھائی کے تین مجموعے کراچی سے مجھ تک دوحہ قطر پہنچے، رقصِ وصال، آنگن میں سمندر اور نشیبِ شہر۔ اپنے پسندیدہ شاعر کی جانب سے بھیجے گئے اِن تین مجموعوں نے بہت عرصے تک مجھے اپنے سحر میں گرفتار رکھا۔ عاصم بھائی کی شاعری کا مطالعہ کرتے ہوئے ہمیشہ Read more about لیاقت علی عاصم کے شعری مجموعے سے ایک انتخاب ۔۔۔ عزیز نبیل[...]

توبہ ۔۔۔ محمد قیوم میؤ

اپنے پچھلے گناہوں اور فریب کاریوں سے بھری زندگی کا احساس پرویز صاحب کو جب ہوا تو انہوں نے حج کا ارادہ کیا اور انہیں کسی قسم کی رکاوٹ اور پریشانی کا سامنا بھی نہیں ہوا۔ دولت ان کے پاس بہت تھی۔ سرکاری اور پرائیویٹ دفتروں سے آج کل اپنے کام کس طرح کرائے جاتے Read more about توبہ ۔۔۔ محمد قیوم میؤ[...]

سفر عشق۔۔۔ طارق محمود مرزا… قسط۔ ۳

کچھ بد مزاج لوگ ___________________   ریاض الجنۃ میں اشراق کی ادائیگی کے بعد ایک صبح ہم مسجد سے ملحق مقامی مارکیٹ میں چلے گئے۔ یہ مارکیٹ مسجد کے شمال مغرب میں واقع ہے۔ اتوار بازار کی طرز پر اس مارکیٹ کے اندر چھوٹی چھوٹی بہت سی دکانیں ہیں۔ جن میں زائرین کی دلچسپی اور Read more about سفر عشق۔۔۔ طارق محمود مرزا… قسط۔ ۳[...]

یہاں بیٹھیں، رُکیں دم بھر ۔۔۔ ستیہ پال آنند

یہاں بیٹھیں، رُکیں دم بھر، ٹھہر کر سانس لیں سستائیں دو گھڑیاں کہ یہ لمحہ ، ہمارے ماضیِ مطلق سے حالِ پا گریزاں تک دبے پاؤں چلا آیا ہے اپنے ساتھ چپکے سے   یہاں بیٹھیں، ٹھہر کر سانس لیں، سستائیں دو گھڑیاں کہ اس سے پیشتر یہ لمحۂ موجود مستقبل کی جانب اک قدم Read more about یہاں بیٹھیں، رُکیں دم بھر ۔۔۔ ستیہ پال آنند[...]

نظمیں ۔۔ سلمیٰ جیلانی

  پگڈنڈی کا سفر ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔   کہیں بل کھاتی اور کہیں سیدھی یہ پگڈنڈی کہیں دور سفر کو جاتی ہے دو راہی ساتھ ہو لیتے ہیں پھر راستے بنتے جاتے ہیں قوس و قزح میں مدغم سارے رنگ الگ الگ پھیلتے ہیں آنکھوں میں امید کی جوت جگا کر پھر سمٹ جاتے ہیں ہمسفر منزل Read more about نظمیں ۔۔ سلمیٰ جیلانی[...]

نظمیں ۔۔۔ اسنیٰ بدر

                     عمارت بات کرتی ہے                    ___________________   عمارت بات کرتی ہے …. جلال الدین اکبر کے وسیع الشان اعلیٰ مقبرے پر جب میں پہنچی تو مجھے محسوس ہوتا تھا عمارت بات کرتی ہے کہیں گھوڑوں کی ٹاپیں اور سپہ سالار تلواریں فضا میں حوصلہ مندی کے پرچم اونچی میناریں جلال الدین اکبر تخت Read more about نظمیں ۔۔۔ اسنیٰ بدر[...]

نظمیں ۔۔۔ عارفہ شہزاد

  تشنگی کی قسم! ­____________________________   یہاں دن رات کے عنصر کی یکجائی کہاں دشوار ہے بس ذائقے ترتیب دیتے ہاتھ میری دسترس میں ہوں ہوا کے پر لگاؤں آسمانوں کے افق چھو لوں ستارے ٹانک دوں چاہوں جہاں سارے میں پھیلوں چاندنی بن کر بھروں مٹھی میں سورج اور آنچل کو دھنک سے رنگ Read more about نظمیں ۔۔۔ عارفہ شہزاد[...]

مختصر نظمیں ۔۔۔ سلیم انصاری

زیاں ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔   یہ کیسا زیاں ہے کہ اب فصلِ گل میں پرندے خود اپنے پروں کو کتر کے ہی اپنے نشیمن بنانے پہ مجبور ہیں۔۔۔۔! ٭٭         شکست خوردہ نظم ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔   جگنوؤں کے قتل میں ناکام ہو کر جب وہ اپنے ہاتھ میں خنجر لئے لوٹا تو اس کے گھر Read more about مختصر نظمیں ۔۔۔ سلیم انصاری[...]

شعر شور انگیز، مطالعۂ میر کا ایک سنگ میل ۔۔۔ پروفیسر رحمت یوسف زئی

شمس الرحمن فاروقی اُردو کے ان گنے چنے نقادوں میں شامل ہیں جنہیں رجحان ساز ہونے کا اعزاز حاصل ہے۔ فاروقی خود شاعر ہیں اور اسی لیے انہیں یہ حق پہنچتا ہے کہ وہ شعر پر اظہار خیال کریں۔ ورنہ اردو کی ایک بڑی عجیب و غریب روایت بن گئی ہے کہ ایسے بر خود Read more about شعر شور انگیز، مطالعۂ میر کا ایک سنگ میل ۔۔۔ پروفیسر رحمت یوسف زئی[...]

مشتاق احمد یوسفی کی ’’شام شعر یاراں‘‘ ۔۔۔ ڈاکٹر قرۃ العین طاہرہ

شام شعر یاراں، مشتاق احمد یوسفی کی آخری کتاب ہے جس میں ماضیِ قریب و بعید بلکہ بعید ہی بعید میں لکھے گئے ۲۱ مضامین کو مرتب و مدون کر کے آرٹس کونسل کراچی نے تبرکات جانتے ہوئے مصنف کی خواہش کے بغیر ساتویں علمی اردو کانفرنس منعقدہ ۱۶. اکتوبر ۲۰۱۴ء کے موقع پر مرتبین Read more about مشتاق احمد یوسفی کی ’’شام شعر یاراں‘‘ ۔۔۔ ڈاکٹر قرۃ العین طاہرہ[...]

’اس آباد خرابے میں‘ ایک جائزہ ۔۔۔ گل شبو

ہر انسان اپنی زندگی میں رنج و خوشی اور کرب و طرب سے گزرتا ہے۔ کسی فرد کو اس سے مفر نہیں۔ ہاں کچھ لوگ اسے ’خود نوشت‘ کے طور پر قلم بند کر کے بعد میں آنے والوں کے لیے محفوظ کر دیتے ہیں اور کچھ لوگ موقع بہ موقع زبانی طور پر اپنے Read more about ’اس آباد خرابے میں‘ ایک جائزہ ۔۔۔ گل شبو[...]

نوری لہنگا ۔۔۔ عماؔر نعیمی

عصرِ حاضر کی رِیت کے مطابق آسمان نے اپنے رخِ روشن پہ اسموکی میک اپ کر لیا تھا۔ ستارے کسی دوشیزہ کی نتھنی کے مانند تاباں تھے۔ ماہ نے مہر سے ایک ماہ کا اضافی نور مستعار لے لیا تھا۔ اسے شعور تھا کہ شامِ وصل عُرس کی دیوی ہے۔ ہوا میں خنکی پاؤں پھیلا Read more about نوری لہنگا ۔۔۔ عماؔر نعیمی[...]

بھانبھڑ ۔۔۔ نجمہ ثاقب

جب مُشکی گھوڑی نے ڈھوک نواں لوک کے آر پار بہتے راج بہا کے تنگ مو گے کو پار کرنے کے لیے اپنے آبنوسی وجود کو تولا۔ تو دونوں وقت مِل رہے تھے اور کچے نیم پکّے گھروں سے نکلتا دھواں جھٹپٹے میں مد غم ہو گیا تھا۔ گھوڑی نے کنوتیاں دبائیں اور اگلے سموں Read more about بھانبھڑ ۔۔۔ نجمہ ثاقب[...]

کنگ خان ۔۔۔ داؤد کاکڑ

  ایک دن میں ان کی قبر کے پہلو میں چمن پر چوکڑی مار کر بیٹھا زیرِلب تلاوت کر رہا تھا۔ گرمی تھی اور کھلی دھوپ تھی۔ میری آنکھوں پر دھوپ کی عینک تھی لیکن اس کے باوجود میری آنکھیں بند تھیں تاکہ میں یکسوئی سے تلاوت کر سکوں۔ اچانک مجھے لگا جیسے کسی نے Read more about کنگ خان ۔۔۔ داؤد کاکڑ[...]

غزلیں ۔۔۔ مظفر حنفی

ہمارے گھر پہ کبھی سائبان پڑتا نہیں یہ وہ زمیں ہے جہاں آسمان پڑتا نہیں   پڑاؤ کرتے چلے راہ میں تو چلنا کیا سفر ہی کیا ہے اگر ہفت خوان پڑتا نہیں   بجھانی ہو گی ہمیں خود ہی اپنے گھر کی آگ کہیں سے آئے گی امداد، جان پڑتا نہیں   مزے میں Read more about غزلیں ۔۔۔ مظفر حنفی[...]

غزلیں ۔۔۔ عرفان ستار

غزلیں ۔۔۔ عرفان ستار

غزلیں ۔۔۔ تنویر قاضی

کسی بارش کے جو با دل رہے ہیں تمہاری آنکھ کا کاجل رہے ہیں   نہیں مانجھی سے اب نظریں ملاتے مسافت کے لئے بے کل رہے ہیں   رکھو جاری تم اپنی گُفتگُو کو لگے جیسے کہ جادو ٹل رہے ہیں   زمانے بن گئے ہیں شامیانے تمہارے ساتھ اک دو پل رہے ہیں Read more about غزلیں ۔۔۔ تنویر قاضی[...]

غزلیں ۔۔۔ محمد صابر

نہاں کے پردۂ پیچاک کو نہیں مانے فریب دیدۂ ادراک کو نہیں مانے   یہ بد گمان جہنم میں ڈال دوں گا میں لعین صاحبِ املاک کو نہیں مانے   کسی بھی آنکھ نے دیکھا ہوا نہیں سمجھا یہ لوگ بر سرِ افلاک کو نہیں مانے   وجود غیب کو آدم کبھی نہیں مانا سو Read more about غزلیں ۔۔۔ محمد صابر[...]

غزلیں ۔۔۔ نوید ناظم

ہجومِ یاراں کو بھی میں کم تر نہیں سمجھتا پہ دردِ تنہائی سے تو بڑھ کر نہیں سمجھتا   مجھے وہ اندر سے جان پائے یہ چاہتا ہوں وہ جو مِری بات کو بھی اکثر نہیں سمجھتا   اگر مِرا غم نہ ہو تو میں بھی نہیں رہوں گا میں جس سے قائم ہوں تُو Read more about غزلیں ۔۔۔ نوید ناظم[...]

غزلیں ۔۔۔ عاطف ملک

آباد درد و غم سے ہے کاشانِ عین میم* اشکِ لہو سے لکھا ہے دیوانِ عین میم   تیرِ نظر تھا ان کا، خطا ہوتا کس طرح ہونا تھا جن کو، ہو گئے، اوسانِ عین میم   اس نازنیں کی تابشِ رخسار دیکھ کر ناصح بھی ہو گئے تھے رقیبانِ عین میم   خاکِ وفا Read more about غزلیں ۔۔۔ عاطف ملک[...]

غزل ۔۔۔ جلیل حیدر لاشاری

مَیں ترے شہر میں آتا ہوں،سنور جاتا ہوں ٹوٹتا بھی نہیں مَیں اور بکھر جاتا ہوں   شہر چھوڑے ہوئے بھی اس کو زمانہ گزرا جانے کیا سوچ کے پھر بھی مَیں اُدھر جاتا ہوں   لوگ انجان ہیں، رستے تو ہیں واقف اپنے انہی رستوں سے ملاقات مَیں کر جاتا ہوں   بدلا بدلا Read more about غزل ۔۔۔ جلیل حیدر لاشاری[...]