اکتوبر 3, 2013

تازہ شمارہ

مجھے کہنا ہے کچھ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

ہمیشہ کی طرح نیا شمارہ نئی سہ ماہی کی پہلی تاریخ کو ہی آن لائن کیا جا رہا ہے۔ میرا طریقہ یہ ہے کہ تخلیقات کو ایک جگہ جمع کرتا جاتا ہوں، پھر جس سہ ماہی کا شمارہ ہو، اس کے پچھلے ماہ کی پندرہ تاریخ کے آس پاس میں اپنی لائبریری کا کام ختم Read more about مجھے کہنا ہے کچھ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔[...]

حمد ۔۔۔ احمد محفوظ

  سب ترا ہے میرا کیا ہے اے خدا میرے خدا جو بھی ہے تیری عطا ہے اے خدا میرے خدا   تو ہی اب اذن رہائی دے کہ کھل کر سانس لے قید تن میں بولتا ہے اے خدا میرے خدا   نطق حادث سے کہاں ممکن کہ ہو حمد قدیم تو ورائے ماسوا Read more about حمد ۔۔۔ احمد محفوظ[...]

نعت پاک ۔۔۔ ثناء اللہ ظہیرؔ

تھی اُن کے در پہ لُٹانی، سنبھال کر رکھی متاعِ اشک پرانی سنبھال کر رکھی   کہ ایک دن اسے آقا کی نعت ہونا تھا غزل نے اپنی جوانی سنبھال کر رکھی   وہ نعت جس سے مہکتی ہے شب کی تنہائی وہ نعت رات کی رانی سنبھال کر رکھی   حضور آپ کی مِدحت Read more about نعت پاک ۔۔۔ ثناء اللہ ظہیرؔ[...]

نعت رسول پاک ۔۔۔ ابرارؔ کرتپوری

(ابرار کرتپوری اپنی حمدیہ اور نعتیہ شاعری کے لئے مقبول تھے۔ یہاں ان کی ایک نعت ان کی کتاب ’مدحت‘ سے منتخب کی جا رہی ہے۔ اس مجموعے کی اہم ترین بات یہ تھی کہ انہوں نے ساری نعتیں غالب کی زمینوں میں کہی ہوئی شامل کی تھیں)   جب مدینے کا سفر یاد آیا Read more about نعت رسول پاک ۔۔۔ ابرارؔ کرتپوری[...]

غزلیں ۔۔۔ ابرارؔ کرتپوری

نمایاں جب وہ اپنے ذہن کی تصویر کرتا ہے ہر اک اہل محبت کو بہت دلگیر کرتا ہے   وہ کیوں مسرور ہوتا ہے ہمارا خون بہنے سے سر حق کس لیے ظالم تہ شمشیر کرتا ہے   وفا کا نام لیتا ہے وفا نا آشنا ہو کر وہ خود کو انتہائی پارسا تعبیر کرتا Read more about غزلیں ۔۔۔ ابرارؔ کرتپوری[...]

سخن سراؤں سے زہرا جبیں چلے گئے ہیں ۔۔۔ ناصر عباس نیّر

  پروفیسرگوپی چند نارنگ کے انتقال پر حرفے چند   ہندوستان کی معاصر اردو تنقید میں صف اوّل کے تین نقاد تھے: شمس الرحمٰن فاروقی، شمیم حنفی اور گوپی چند نارنگ۔  صرف ڈھائی برسوں میں اسی ترتیب سے رخصت ہوئے۔  نارنگ صاحب عمر میں ان تینوں سے بڑے تھے۔  سب سے آخر میں گئے؛ کل Read more about سخن سراؤں سے زہرا جبیں چلے گئے ہیں ۔۔۔ ناصر عباس نیّر[...]

ڈاکٹر نارنگ ’ساختیات‘ ہی کے نہیں ’’خود ساختیات‘‘ کے بھی ماہر ہیں ۔۔۔ مشفق خواجہ

ڈاکٹر نارنگ صاحب جب بھی پاکستان تشریف لاتے ہیں تو یہاں کی ادبی دنیا میں زلزلہ سا آ جاتا ہے۔  عام زلزلے سے زیر زمین سطح پر ارتعاش پیدا ہوتا ہے،ڈاکٹر نارنگ قضیۂ زمین برسرِ زمین کے قائل ہیں۔ ان سے ملنے کے لیے لوگ بے تاب ہوتے ہیں اور وہ خود بھی سراپا اشتیاق Read more about ڈاکٹر نارنگ ’ساختیات‘ ہی کے نہیں ’’خود ساختیات‘‘ کے بھی ماہر ہیں ۔۔۔ مشفق خواجہ[...]

’’سفر آشنا‘‘ کی باز قرأت: منزل منزل عشق و جنوں ۔۔۔ ڈاکٹر مشتاق صدف

پروفیسر گوپی چند نارنگ اردو زبان و ادب کے ایک دیو قامت نقاد اور محقق ہیں۔ انھوں نے تحقیق و تنقید، زبان، لسانیات اور تھیوری کے شعبہ میں بے پناہ شہرت اور مقبولیت حاصل کی ہے۔ ان کی ہر تحریر ذوق و شوق سے پڑھی جاتی ہے۔ ’سفر آشنا‘ جو ان کے بیرونی ممالک کا Read more about ’’سفر آشنا‘‘ کی باز قرأت: منزل منزل عشق و جنوں ۔۔۔ ڈاکٹر مشتاق صدف[...]

۱۸۵۷ء اور اُردو شاعری ۔۔۔ پروفیسر گوپی چند نارنگ

ہم اس سے بحث کر چکے ہیں کہ انیسویں صدی کے نصف اول کی اردو شاعری میں حب وطن کے جدید تصور کی تلاش عبث ہے۔  اس زمانے میں وطنیت کا تصور آج کے تصور سے بالکل مختلف تھا۔  یہ جدید تصور انیسویں صدی کے اواخر میں نئی تاریخی تبدیلیوں کے نتیجے میں نشاۃ الثانیہ Read more about ۱۸۵۷ء اور اُردو شاعری ۔۔۔ پروفیسر گوپی چند نارنگ[...]

ما بعد جدیدیت، اردو کے تناظر میں ۔۔۔ گوپی چند نارنگ

اردو میں مابعد جدیدیت کی بحثوں کو شروع ہوئے کئی برس ہو چکے ہیں۔  اہل علم جانتے ہیں کہ جدیدیت اپنا تاریخی کردار ادا کر کے بے اثر ہو چکی ہے اور جن مقدمات پر وہ قائم تھی وہ چیلنج ہو چکے ہیں۔  وہ ادیب جو حساس ہیں اور ادبی معاملات کی آگہی رکھتے ہیں، Read more about ما بعد جدیدیت، اردو کے تناظر میں ۔۔۔ گوپی چند نارنگ[...]

بشریٰ رحمٰن کا ناول دانا رسوئی۔ ایک تجزیہ۔ ۔ ڈاکٹر نجمہ شاہین کھوسہ

محترمہ بشریٰ رحمن ان اہل قلم میں سے ہیں جن کا نام کسی تعارف اور جن کی تحریریں کسی تحسین کی محتاج نہیں۔  وہ ناول لکھیں، افسانہ لکھیں یا کالم۔  انہیں ہمیشہ معتبر اہل نظر سے داد ہی ملتی ہے۔  ان کا کمال یہ ہے کہ وہ گرد و پیش کے مناظر کو کیمرے کی Read more about بشریٰ رحمٰن کا ناول دانا رسوئی۔ ایک تجزیہ۔ ۔ ڈاکٹر نجمہ شاہین کھوسہ[...]

غزلیں ۔۔۔ ثناء اللہ ظہیرؔ

اپنی مستی، کہ ترے قرب کی سرشاری میں اب میں کچھ اور بھی آسان ہوں دشواری میں   کتنی زرخیز ہے نفرت کے لیے دل کی زمیں وقت لگتا ہی نہیں فصل کی تیاری میں   اک تعلق کو بکھرنے سے بچانے کے لیے میرے دن رات گزرتے ہیں اداکاری میں   وہ کسی اور Read more about غزلیں ۔۔۔ ثناء اللہ ظہیرؔ[...]

نظمیں ۔۔۔ ثناء اللہ ظہیرؔ

  ادھورا اندمال   ذہن میں اب بھی سلگتا ہے وہ لمحہ جب میں قصرِ پرویز میں چھوڑ آیا تھا شیریں اپنی   کان پر روز قلم رکھ کے نکلتا تھا (کہ تیشہ ہے مرا) روز اک دودھیا الفاظ کی نہر قصرِ پرویز تلک جاتی تھی صرف شیریں کو پتہ چلتا تھا   کوہِ قرطاس Read more about نظمیں ۔۔۔ ثناء اللہ ظہیرؔ[...]

آں جہانی رشید حسن خان: بے سند ہوتے ہوئے بھی مستند سمجھے گئے ۔۔۔ ڈاکٹر رؤف خیر

(اس عنوان پر چونکیے گا نہیں۔  دلائل و براہین کی روشنی میں انھیں آں جہانی کہا گیا ہے)   ڈاکٹر ٹی آر رینا (جموں کشمیر) کی جتنی تعریف کی جائے کم ہے کہ انھوں نے محقق و مدون و صاحب نظر نقاد رشید حسن خان کے فکر و فن پر دادِ تحقیق دی بلکہ ان Read more about آں جہانی رشید حسن خان: بے سند ہوتے ہوئے بھی مستند سمجھے گئے ۔۔۔ ڈاکٹر رؤف خیر[...]

آسماں کی ناف میں رکھا ہوا دن اور چلتی ہوئی رات میں توصیف خواجا کی نظم ۔۔۔ علی محمد فرشی

شاعری کے بارے میں ہمارے ہاں دو مغالطے بہت راسخ ہیں ایک تو یہ کہ شاعری بہت آسان کام ہے؟ نہ اس کے لیے کسی درس گاہ کی ضرورت، نہ مشاہدے کی حاجت اور نہ زندگی کو تجربے کی بھٹی میں جھونکنے کی اذیت! اور اعلیٰ شاعری کا تنقیدی مطالعہ تو محض وقت کا ضیاع Read more about آسماں کی ناف میں رکھا ہوا دن اور چلتی ہوئی رات میں توصیف خواجا کی نظم ۔۔۔ علی محمد فرشی[...]

جدید اردو شاعری کی عصری معنویت ۔۔۔ محمد اسد اللہ

جدیدیت اور ترقی پسند تحریک عالمی ادبیات میں رو نما ہونے والی دو اہم تحریکات تھیں۔  اردو ادب پر بھی ان دونوں تحریکات کے گہرے اثرات مرتسم ہوئے۔  ترقی پسند تحریک کے عطا کر دہ ادبی سرمائے کی افادیت سے انکار نہیں کیا جا سکتا کہ زمینی حقیقتوں کی عکاسی، بعض روایات سے بغاوت، احتجاج Read more about جدید اردو شاعری کی عصری معنویت ۔۔۔ محمد اسد اللہ[...]

مظفر حنفی کی مینا بول رہی ہے ۔۔۔ انصار احمد معروفی

پروفیسر مظفر حنفی نے اخیر عمر تک بچوں کے لیے لکھا ہے اور بہت خوب لکھا ہے، ان کے کلام میں بچوں کی سی شرارت، بچوں کی آنکھ مچولی، اور بچوں کی سی تمام شوخیاں جمع ہو گئی ہیں، اگر یہ کہا جائے کہ بچوں کے لیے انھوں نے جتنا کچھ لکھا ہے ؛ چاہے Read more about مظفر حنفی کی مینا بول رہی ہے ۔۔۔ انصار احمد معروفی[...]

دو نظمیں ۔۔۔ مصحف اقبال توصیفی

  میں نے اس کو غور سے دیکھا   ہم دونوں نے مٹی کھودی نیچے دیکھا۔  ہاتھ اُٹھائے ہاتھوں میں۔  یہ کیا مٹی کے نیچے بھی مٹی تھی   دھول میں سر سے پاؤں تک ایسے ہم دونوں اَٹے ہوئے تھے لیکن اس کی آنکھوں میں میں نے ایک چمک دیکھی اس کے گرد اک Read more about دو نظمیں ۔۔۔ مصحف اقبال توصیفی[...]

نظمیں ۔۔۔ فرزانہ نیناں

  بیگار   کہاں ہو تم ۔۔۔ ادھر دیکھو قلم کی روشنائی نیلگوں صحرا کی شاموں سے سنہری کاغذوں کی کشتیوں میں ریت بھر کرلا رہی ہے ہوا دھیرے سے نغمے بارشوں کے گا رہی ہے!!! ٭٭٭       پھٹے غبارے   کہاں چھپائی ہے خوشبو تم نے کہاں رکھے ہیں سخن تمہارے نجانے Read more about نظمیں ۔۔۔ فرزانہ نیناں[...]

ایک وہ وقت۔۔۔ اسنیٰ بدر

ایک وہ وقت کہ آپ کی آہٹ کو دالان سمجھتے تھے کاہی ماشی زرد غرارے آپ کے اوپر سجتے تھے   اک وہ وقت کہ جب آنگن میں اجلے بستر لگتے تھے چھڑکاؤ ہوتا تھا دریاں چادر تکیے، مونڈھے تھے   اک وہ وقت کہ ایک جمیلہ روز صبح کو آتی تھی راکھ ہٹا کر Read more about ایک وہ وقت۔۔۔ اسنیٰ بدر[...]

نظمیں ۔۔۔ تنویر قاضی

  جون ایلیا کے لئے     اُس کو قید خیال میں کرنا مُشکل جنگلی ہرن کو جال میں کرنا مُشکل ‎‎‎٭٭٭         بُل فائیٹنگ   پھر وہ اُن کے تماشے کے لئے دیوانہ وار جھپٹتا ہے بُل کی آنکھوں میں سُرخ مرچیں ڈال کر مشتعل کیا جاتا ہے لڑائی سے پہلے Read more about نظمیں ۔۔۔ تنویر قاضی[...]

نظمیں ۔۔۔ سلیم انصاری

  مری نظموں کے سادہ لوح قاری   مری نظموں کے سادہ لوح قاری تمہیں کیا علم؟ میں برسوں سے اپنی سوچ کے جنگل میں تم کو بے سبب بھٹکا رہا ہوں بظاہر میری سب نظمیں تمہارے خواب کی مانند لگتی ہیں مگر یہ سچ نہیں ہے مری نظموں کے سارے لفظ کاذب ہیں مری Read more about نظمیں ۔۔۔ سلیم انصاری[...]

دانہ و دام کی الف لیلہ ۔۔۔ نگہت سلیم

بہت مشکل سے اس نے اپنی آنکھیں کھولیں۔  ۔  غالباً اس کے سر کے پچھلے حصے پر کاری ضرب لگائی گئی تھی۔  ۔  اس نے پیچھے بندھے اپنے ہاتھوں پر رسی کی گرفت کو محسوس کیا اور یہ بھی کہ اس کے جسم پر لباس کے نام پر فقط زیر جامہ ہے۔  وہ کتنے گھنٹے Read more about دانہ و دام کی الف لیلہ ۔۔۔ نگہت سلیم[...]

خاک بدر ۔۔۔ نجیبہ عارف

شہروں سے میرا عجیب سا رشتہ قائم ہو جاتا ہے۔  ایک ایسا رشتہ جو میں کسی کو بتا نہیں سکتی، دکھا نہیں سکتی، سمجھا نہیں سکتی۔  مگر میرے پیٹ کے اندر ناف کے پیچھے اس رشتے کی گرہ پڑ جاتی ہے جو بار بار مجھے اندر سے کریدتی اور خراشتی رہتی ہے۔  جب بھی میں Read more about خاک بدر ۔۔۔ نجیبہ عارف[...]

محور اپنا اپنا ۔۔۔ حنیف سیّد

کل دیوے گا، کل پاوے گا کل پاوے گا، کل پاوے گا ’’گیارہ بچّے لائی، کان پھٹّی۔۔۔۔  ! اور راجو ممبر کے یہاں گیارہ سال بعد ہوا، بیٹا۔۔۔۔  !‘‘ صفائی کرمچاری گھسیٹے کی بیوی رنگیلی نے سریلی تان میں کچھ اِس طرح محلے میں کانا پھوسی کی کہ راجو ممبر کی حویلی میں کان پھٹّی Read more about محور اپنا اپنا ۔۔۔ حنیف سیّد[...]

عینی آپا۔  شعلہ بھی شبنم بھی۔۔۔ عارف محمود

یہ بات سن 1960 کی ہے جب مجھے میرے ایک دوست نے "نقوش” لاہور کا سالنامہ لا کر دیا اس میں اس دور کی تمام ادبی شخصیات کی تصویریں بھی تھیں اچانک نگاہ عینی آپا کی تصویر پر ٹھہر گئی۔  دیر تک تصویر کو ہر زاویئے سے دیکھتا رہا۔  اس سے قبل ان کے کچھ Read more about عینی آپا۔  شعلہ بھی شبنم بھی۔۔۔ عارف محمود[...]

غزلیں ۔۔۔ غزلیں ۔۔۔ نذرِ جون ایلیا (جون ایلیا، عرفان عابدؔ، سید عاطف علی، محمد شکیل خورشید، محمد عظیم، علی اشرف، امین شارقؔ، عبدالرؤوف)

(اردو محفل فورم (https://urduweb.org/mehfil) میں عرفان عابد نے جون ایلیا کی زمین میں ایک غزل پوسٹ کی تو میری فرمائش پر اسی طرح پر محفل فورم کے دوسرے اراکین شعراء نے بھی غزلیں کہہ ڈالیں۔  یہ ’’گلدستہ‘‘ مع اصل غزل یہاں پیش کیا جا رہا ہے۔  ا ع)   غزل ۔۔۔ جون ایلیا   عمر Read more about غزلیں ۔۔۔ غزلیں ۔۔۔ نذرِ جون ایلیا (جون ایلیا، عرفان عابدؔ، سید عاطف علی، محمد شکیل خورشید، محمد عظیم، علی اشرف، امین شارقؔ، عبدالرؤوف)[...]

غزلیں ۔۔۔ ڈاکٹر رؤف خیرؔ

مجھے ٹوک مت خدارا، مجھے چھوڑ مت خدارا میں علامت خطا ہوں، تو عطا کا استعارہ   مرے جاں نثار ہمدم مجھے یہ نہیں گوارا مرے فائدے کی خاطر ہو ترا کوئی خسارہ   یہ فُرات ہے سراپا، وہ سمندر اور کھارا ہے الگ الگ جو دھارا، ہے انا کا کھیل سارا   نہیں واپسی Read more about غزلیں ۔۔۔ ڈاکٹر رؤف خیرؔ[...]

غزلیں ۔۔۔ فریادؔ آزر

جو بنا لے منزلِ مقصود کو راہِ خیال منتظر ہے آج بھی اس کی گزرگاہِ خیال   وقت نے دھندلا دئے سارے حقیقت کے نقوش بس گیا ہے جب سے آنکھوں میں کوئی ماہِ خیال   کاش میں جس کو بھی لے آؤں تخیل میں کبھی خود بخود کھنچتا چلا آئے وہ ہمراہِ خیال   Read more about غزلیں ۔۔۔ فریادؔ آزر[...]

غزلیں ۔۔۔ راجیش ریڈی

کیا جانے جہاں تھا میں وہاں تھا کہ نہیں تھا ہونے کا یقیں، میرا گماں تھا کہ نہیں تھا   قاصد! کچھ اثر اُس پہ عیاں تھا کہ نہیں تھا کچھ اشک سا آنکھوں میں رواں تھا کہ نہیں تھا   مدت سے میں بُجھ کر بھی یہی سوچ رہا ہوں جتنا میں جلا اُتنا Read more about غزلیں ۔۔۔ راجیش ریڈی[...]

غزلیں۔۔۔ کاشف غائر

یہ معجزہ بھی ہُوا ہے دُعا کے آخری دن پلٹ گیا مرے نزدیک آ کے آخری دن   وہ پہلے دن سے ہی منزل کے انتظار میں تھا کہ موج لے گئی جس کو بہا کے آخری دن   تمام عمر کی میں بے رُخی کو بھول گیا ملا جو مجھ سے کوئی مُسکرا کے Read more about غزلیں۔۔۔ کاشف غائر[...]

غزلیں ۔۔۔ سلیمان جاذبؔ

عکس مسمار کرتا جاتا ہوں روز اک آئنہ بناتا ہوں   فون کرتا ہوں بار ہا ہر شب جاگتا ہوں، اسے جگاتا ہوں   جب بھی آتا ہے یاد تو مجھ کو نام تک اپنا بھول جاتا ہوں   کیا عجب ہے کہ تیز آندھی میں اک دیا سا میں ٹمٹماتا ہوں   وہ کہانی Read more about غزلیں ۔۔۔ سلیمان جاذبؔ[...]

غزلیں ۔۔۔ محمد صابر

قیام دے بھلے تلوار کے برابر میں دراز کر مجھے دیوار کے برابر میں   میں منتظر ہوں ترا تجھ سے چار قدموں پر لگا ہوا ترے بازار کے برابر میں   اٹھا کے لے گیا سستا سا مال ٹھیلے سے پڑا رہا میں خریدار کے برابر میں   یہ دائرہ بھی لگا دے کسی Read more about غزلیں ۔۔۔ محمد صابر[...]

غزلیں ۔۔۔ جلیل حیدر لاشاری

خلاؤں سے کوئی مجھ کو بلانے آ نہ جائے بہت دن ہو گئے ہیں اس زمیں پر مجھ کو آئے   جو اندر سے مقفل ہو، نہ ہوں جس میں مکیں بھی کوئی ایسے مکاں کا در کہاں تک کھٹکھٹائے؟   اُجالے بڑھ گئے اتنے، نہیں دِکھتا ہے کچھ بھی کہیں سے کوئی تھوڑا سا Read more about غزلیں ۔۔۔ جلیل حیدر لاشاری[...]

غزل ۔۔۔ اعجاز عبید

خاموش ہیں لب، کوئی دعا ہی نہیں آتی ایسی تو کبھی دل پہ تباہی نہیں آتی   تجھ بن بھی گزرتے ہیں مرے دن بہت اچھے دینی مجھے جھوٹی یہ گواہی نہیں آتی   خوشبو تری لاتی ہے، چلی جاتی ہے یکلخت ہاتھوں میں مرے بادِ صبا ہی نہیں آتی   کرتا ہے جو وہ Read more about غزل ۔۔۔ اعجاز عبید[...]

"راستے خاموش ہیں‘‘ افسانوی مجموعہ، تبصرہ و تجزیہ۔۔۔ محمد علم اللہ

کسی بھی انسان کے بارے میں اس کے حلیےی ا روزگارکی بنیاد پر رائے قائم نہیں کرنی چاہئے، مگر انسانی طبیعت کئی مرتبہ ظاہری طور پر کیا نظر آ رہا ہے اسی سے کوئی نتیجہ اخذ کر لیتی ہے۔  پہلے پہل جب انجینئر سید مکرم نیاز کی کتاب ’’راستے خاموش ہیں‘‘ ملی تو اسے ’’ایویں Read more about "راستے خاموش ہیں‘‘ افسانوی مجموعہ، تبصرہ و تجزیہ۔۔۔ محمد علم اللہ[...]

نیا نگر ۔۔۔ تصنیف حیدر

ناول، دوسری قسط   نیا نگر میں ان دنوں نشستوں کا موسم سا آ گیا تھا۔  ہر نشست کے لیے پہلے کوئی بہانہ تلاش کیا جاتا۔  کسی کا جنم دن ہے، کسی کی شادی کی سالگرہ ہے، کسی نے پہلی غزل لکھی ہے، کسی نے فلاں استاد کی شاگردی اختیار کی ہے۔  الغرض طرح طرح Read more about نیا نگر ۔۔۔ تصنیف حیدر[...]