اکتوبر 3, 2013

تازہ شمارہ

مجھے کہنا ہے کچھ ۔۔۔۔

تازہ شمارہ حاضر ہے۔ جو اس بار کچھ زیادہ ہی ضخیم ہو گیا ہے اگرچہ اس بار کچھ نیا قسط وار سلسلہ شروع کرنے کا ارادہ تھا، لیکن رسالے کی ضخامت کے باعث اسے مؤخر کر رہا ہوں۔ اس بار بہت دنوں بعد کوئی گوشہ شامل کیا جا رہا ہے۔ احمد رشید علی گڑھ کے Read more about مجھے کہنا ہے کچھ ۔۔۔۔[...]

نعت ۔۔۔ محمد بلال اعظم

تسبیحِ محمدﷺ میں یوں مصروف قلم ہو ’’الہام کی رم جھم‘‘ ہو، تصور میں حرم ہو   رنگوں میں دھلے حرف ہوں، خوشبو میں بسے لفظ اندازِ ثنا ہم سرِ معیارِ ارم ہو   ہر شے میں تراﷺ عکس ابھارا ہے خدا نے تخلیقِ بہاراں ہو کہ ترتیبِ ارم ہو   تخلیقِ دو عالم ہو Read more about نعت ۔۔۔ محمد بلال اعظم[...]

علامہ اقبال کی یاد میں ۔۔۔ امین احسن اصلاحی

یہ دَور ہمارے عروج و اقبال کا دَور نہیں، بد بختی و ادبار کا دَور ہے۔ ہم پاتے کم ہیں، کھوتے زیادہ ہیں۔ اونچے درجے کے اشخاص ہم میں اولاً تو پیدا نہیں ہوتے اور اگر دو چار پیدا ہوتے ہیں تو قبل اس کے کہ ان کے جانشین پیدا ہوں، وہ اپنی جگہ خالی Read more about علامہ اقبال کی یاد میں ۔۔۔ امین احسن اصلاحی[...]

ادبی نقاد اور ناول نگار شمس الرحمٰن فاروقی سے ایک گفتگو: سونل شاہ (ترجمہ: شفتین نصیر)

انڈیا کے ادبی حلقوں میں حال ہی میں منظر عام پر آنے والے انگریزی ناول The Mirror of Beauty نے ہلچل مچا دی ہے جو دراصل نو سو چوراسی صفحات میں اردو کے مشہور شاعر داغ دہلوی کی والدہ وزیر خانم کی حیات اور ان کے زمانے پر مبنی ایک افسانوی داستان پر مشتمل ہے۔ Read more about ادبی نقاد اور ناول نگار شمس الرحمٰن فاروقی سے ایک گفتگو: سونل شاہ (ترجمہ: شفتین نصیر)[...]

نکتہ گو ۔۔۔ محمد طارق غازی

دیباچہ گزشتہ دنوں یونہی بیٹھے بیٹھے خیال آیا کہ کبھی کبھی آپ لوگوں سے نُکتَگوٗ رہا کرے۔ در اصل یہ مخفف بنایا ہے نکتہ اور گفتگو سے، یعنی کسی علمی، دینی، ادبی، سماجی، اخباری نکتہ پر مختصر گفتگو، تھوڑے سے الفاظ میں اظہار خیال، رائے زنی، یا کسی پرانی یاد کا تذکرہ۔ میں نے بس Read more about نکتہ گو ۔۔۔ محمد طارق غازی[...]

لفظ نما ۔۔۔ طارق غازی

طناز طَن ۰ نَا ۰ ز (ن مشدد ۰ ز ساکن)   عربی ۱۔ صفت ذاتی ۲۔ اسم فاعل ۰ مذکر ۰ واحد مصدر ثلاثی مجرد ط ۰ن ۰ز سے مشتق اسم مبالغہ۔ عربی سے ماخوذ اسی ساخت اور کئی مرادی معنیٰ کے ساتھ اردو میں مستعمل ہے۔ اردو میں پہلی بار ۱۶۲۵ میں قصہ Read more about لفظ نما ۔۔۔ طارق غازی[...]

غزلیں ۔۔۔ محمد طارق غازی

سوچ کے نیم وا دریچے سے ۔۔۔ طارق غازی

بند گلیاں دکھائی دیتی ہیں زرد کلیاں دکھائی دیتی ہیں رنگ رلیاں دکھائی دیتی ہیں   ہاں وہ شب جس میں خواب ٹوٹے تھے عشق روٹھا تھا، ساتھ چھوٹے تھے جتنے سچے تھے سارے جھوٹے تھے   کروٹیں نیم جاں ارادوں کی آہٹیں کچھ ہیولیٰ سازوں کی پیچکیں سب الجھتے دھاگوں کی   تقویٰ روئے Read more about سوچ کے نیم وا دریچے سے ۔۔۔ طارق غازی[...]

ڈاکٹر فریاد آزر ایک مزاحیہ تعارف ۔۔۔ اسد رضا

ریکارڈ کے مطابق ڈاکٹر فریاد آزر کی پیدائش ۱۰؍ جولائی ۱۹۵۶کو بنارس ضلع میں ہوئی۔ اب یہ ضروری نہیں کہ ۱۰؍ جولائی کو ہی ان کی پیدائش ہوئی ہو مگر اتنا تو طے ہے کہ ان کی پیدائش ضرور ہوئی ورنہ آج مسلسل ادبی رسالوں میں ان کی اتنی غزلیں شائع نہیں ہوتیں۔ انٹر میڈئٹ Read more about ڈاکٹر فریاد آزر ایک مزاحیہ تعارف ۔۔۔ اسد رضا[...]

منفرد لہجہ کا شاعر: فریاد آزرؔ ۔۔۔ احسن امام احسن

‭ دورِ جدید میں چند مختلف اور منفرد شعرا ہیں جو اپنے کلام کے مخصوص انداز کی وجہ سے منفرد کہلاتے ہیں۔ ان ہی منفرد شعرا میں ایک اہم اور معتبر نام ڈاکٹر فریاد آزرؔ کا ہے۔ گذشتہ کئی برسوں سے انھیں پڑھتا آ رہا ہوں۔ وہ واقعی متاثر کرنے والی شاعری کرتے ہیں۔ ان Read more about منفرد لہجہ کا شاعر: فریاد آزرؔ ۔۔۔ احسن امام احسن[...]

غزلیں ۔۔۔ ڈاکٹر فریاد آزرؔ

صحرا سے العطش کی صدا آ رہی ہے پھر تاریخ اپنے آپ کو دہرا رہی ہے پھر   پھر بیعتِ یزید سے منکر ہوئے حسین اور ظالموں کی فوج ستم ڈھا رہی ہے پھر   دوبارہ چکھ لیا نہ ہو ممنوعہ پھل کہیں وہ بے لباسیوں میں گھری جا رہی ہے پھر   ہیں لوگ Read more about غزلیں ۔۔۔ ڈاکٹر فریاد آزرؔ[...]

پکار ۔۔۔ ڈاکٹر فریاد آزرؔ

(۱۷ اگست ۲۰۲۳ء کو فیس بک میں علالت کی تصویر کے ساتھ پوسٹ کی گئی آخری بلا عنوان نظم، اس کا عنوان مدیر کا دیا ہوا ہے) یہ میں ہی ہوں یہ میں ہی ہوں جسے سب لوگ بیماروں کی دنیا میں اچانک چھوڑ آئے تھے میرے اعضا کو اکثر منتشر لمحوں نے جانچا تھا Read more about پکار ۔۔۔ ڈاکٹر فریاد آزرؔ[...]

نظمیں ۔۔۔ خلیل مامون

مجھے ابھی بہت دور جانا ہے   کیا پیروں کی تھکن اس سفر کو روک سکتی ہے کیا راستے کے روڑے میرے ارادے کو توڑ سکتے ہیں کیا میں یہاں سے واپس لوٹ جاؤں گا کیا میں اور آگے چل نہیں پاؤں گا نہیں نہیں شاید مجھے جانا ہے بہت دور گو ہوں میں تھکن Read more about نظمیں ۔۔۔ خلیل مامون[...]

غزلیں ۔۔۔ خلیل مامون

بلا رہا ہے مجھے آسماں تمہاری طرف جلا کے نکلا ہوں سب آشیاں تمہاری طرف   میں جانتا ہوں کہ سارے جہاں ہیں ختم یہاں مجھے ملے گا نہ کوئی جہاں تمہاری طرف   خموشیوں کا بس اک سلسلہ ہے دور تلک نہ کوئی لفظ نہ کوئی زباں تمہاری طرف   ہر ایک جیتا ہے Read more about غزلیں ۔۔۔ خلیل مامون[...]

غزلیں ۔۔۔ احمد فریاد

یہ اپنی مرضی سے سوچتا ہے، اسے اُٹھا لو ’’اُٹھانے والوں‘‘ سے کچھ جُدا ہے، اِسے اُٹھا لو   وہ بے ادب اس سے پہلے جن کو اُٹھا لیا تھا یہ ان کے بارے میں پوچھتا ہے، اِسے اُٹھا لو   اسے بتایا بھی تھا کہ کیا بولنا ہے، کیا نہیں مگر یہ اپنی ہی Read more about غزلیں ۔۔۔ احمد فریاد[...]

ایک نظم ۔۔۔ احمد فرہاد

تارا تارا یہ کہتا ہے رات ڈھلے گی رات کے ماتھے پر لکھا ہے رات ڈھلے گی صبح پرستو خواب بدستو نور کے رستو تم نے بس یونہی چلنا ہے رات ڈھلے گی رات نے آخر کو ڈھلنا ہے رات ڈھلے گی ٭٭٭

فن کے تخلیقی امکانات کا ڈسکورس: احمد رشید کے افسانے ۔۔۔ شافع قدوائی

افسانہ مقبول عام تصور کے برخلاف محض روزمرہ کے کسی مانوس تجربے، خارجی مظاہر، معاشرتی چیرہ دستیوں، قدرت کی ستم ظریفیوں یا کسی گہرے داخلی احساس یا وجودی سروکاروں کی فنکارانہ شعور کے ساتھ ترسیل سے عبارت نہیں ہوتا بلکہ یہ اصلاً زبان کے حوالے سے حقیقت کا ایک ایسا رویا (Vision) خلق کرتا ہے Read more about فن کے تخلیقی امکانات کا ڈسکورس: احمد رشید کے افسانے ۔۔۔ شافع قدوائی[...]

احمد رشید کی نثری نظمیں (خیال انگیز حسیاتی تجربے کا نیا شعری آفاق) ۔۔۔ پروفیسر شافع قدوائی

  تخلیقی اظہار کا وفور صنفی حد بندیوں کا تابع نہیں ہوتا اور اکثر یہ اصناف کے بے لچک درجہ بندی پر سوالیہ نشان قائم کرتا ہے۔ مرتعش اور پہلو دار اظہار نثر اور نظم کے باہمی ادغام سے نمو پذیر ہوتا ہے اور اس کی سب سے بہتر مثال نثری نظم ہے۔ تخلیقی دبازت Read more about احمد رشید کی نثری نظمیں (خیال انگیز حسیاتی تجربے کا نیا شعری آفاق) ۔۔۔ پروفیسر شافع قدوائی[...]

مابعد جدید افسانے کی شعریات اور احمد رشید کی افسانوی دنیا ۔۔۔ پروفیسر مولا بخش

فکشن کی نثر ہموار نہیں ہوتی، کثیر الصوت اور کثیر الآہنگ ہوتی ہے۔ اس حقیقت سے آنکھیں جدیدیت گزیدہ افسانہ نگاروں نے چرائیں۔ واحد متکلم کا صیغہ نیز داخلی خود کلامی کا اسلوب جدیدیوں کے لیے امرت تارہ تھا، جہاں سے دیکھئے نظر آتا تھا۔ نتیجتاً جدیدیت کے زیر اثر لکھے گئے تقریباً جملہ افسانوں Read more about مابعد جدید افسانے کی شعریات اور احمد رشید کی افسانوی دنیا ۔۔۔ پروفیسر مولا بخش[...]

احمد رشید: کھوکھلی کگر کا اکیلا مسافر ۔۔۔ نور الحسنین

احمد رشید اُردو کے ان چند افسانہ نگاروں میں سے ایک ہیں جن کی افسانہ گاری سب میں شامل ہوتے ہوئے بھی مختلف ہے۔ جس زمانے میں جدیدیت کا بول بالا تھا اور چند ہی ایسے نام تھے جو جدید افسانوں کے سر خیل کہلاتے تھے تب بھی احمد رشید اُن کے ہمرکاب تھے لیکن Read more about احمد رشید: کھوکھلی کگر کا اکیلا مسافر ۔۔۔ نور الحسنین[...]

احمد رشید کے بیانیوں کا تنزیہی عمل ۔۔۔ پروفیسر طارق سعید

احمد رشید میرے معاصر ہیں لیکن میں ان کو ان کے افسانوں کے ذریعہ ہی جانتا ہوں۔ شاید کسی فنکار کو اس کی تحریروں کی روشنی میں جاننے کا عمل، سب سے بہتر جاننا ہے۔ حقائق کا تنزیہی عمل جب کسی بیانیہ کا مقدر بنتا ہے، تو بقول شافع قدوائی ’’احمد رشید کے لا زمانی Read more about احمد رشید کے بیانیوں کا تنزیہی عمل ۔۔۔ پروفیسر طارق سعید[...]

افسانہ ’بجوٹ‘ کا تنقیدی مطالعہ ۔۔۔ ڈاکٹر عرشیہ جبین

افسانہ’ بجوٹ‘ احمد رشید کا ایک اہم اور دل کو چھونے والا افسانہ ہے۔ یہ ایک ایسی عورت کی کہانی ہے جو بجوٹ ہے اور اولاد نہ پیدا کر نے کے عوض اسے سماج کی زیادتیوں کا شکار ہونا پڑتا ہے اور اپنے شوہر سے بے پناہ محبت کرنے کے باوجود اسے تحفہ میں طلاق Read more about افسانہ ’بجوٹ‘ کا تنقیدی مطالعہ ۔۔۔ ڈاکٹر عرشیہ جبین[...]

مرتکب ۔۔۔ احمد رشید

’’جرح ہو چکی تھی، فیصلہ محفوظ تھا‘‘ مجھے یقین ہے جواب دہی سے بچنے کے لیے ایسا ہی کیا جاتا ہے۔ فیصلے کی تاریخ آئندہ پڑ چکی تھی، حالانکہ ’فیصلہ‘ کسی مصلحت کا محتاج نہیں ہوتا، میں ایسا اس لیے سوچتی ہوں کہ یہ تو مجرم ہی کو معلوم ہے کہ وہ جرم کا مرتکب Read more about مرتکب ۔۔۔ احمد رشید[...]

سندر لال کی لاجو ۔۔۔ احمد رشید (علیگ)

بد زبان عورت مظلوم ہو تو دوسری عورتیں یہ کہہ کر پلّہ جھاڑ لیتی ہیں کہ یہ ہے ہی اس قابل، نہ مردوئے کے منھ لگے نہ پٹے۔ عورت کو عورت کے درد کا احساس دو موقعوں پر زیادہ ہوتا ہے۔ بیوہ ہونے پر دونوں ہاتھ پکڑ کر بٹے سے چوڑیاں توڑی جاتی ہیں تو Read more about سندر لال کی لاجو ۔۔۔ احمد رشید (علیگ)[...]

نظمیں ۔۔۔ احمد رشید

  میں!؟   میں!؟ کتنا کومپلکس ہوں!؟ خود بھی نہیں جانتا! تمہیں کس طرح پہچانوں ٭٭٭       اجالا   اگر تمہارے پاس شمع ہے! اسے جلتا رہنے کے لیے دوسروں کی موم بتیاں جلاؤ ورنہ تمہاری روشنی بھی بجھ جائے گی ٭٭٭       مکتی   سدا ستیہ بولو مُکتی اس میں، Read more about نظمیں ۔۔۔ احمد رشید[...]

حقیقت کو کہانی بنانے کی کاوش ۔۔۔ احمد رشید

زندگی اور موت کی سنگینیوں اور کائناتی سچائیوں کو کہانی کے انداز میں اس طرح پرو دینا کہ فنٹاسی حقیقت اور حقیقت فنٹاسی لگنے لگے، ورنہ حقیقتوں کو پیش کرنے کے لیے علم و حکمت کی مختلف شاخیں اور ادب کی دیگر اصناف سخن موجود ہیں۔ افسانہ شعور و ادراک کی پُر اسرار کائنات کو Read more about حقیقت کو کہانی بنانے کی کاوش ۔۔۔ احمد رشید[...]

اردو بنام ہندی (؟) ۔۔۔ اجمل کمال

سہ ماہی ’’اردو ادب‘‘ کے شمارہ 248-49 (اکتوبر۔دسمبر 2018- جنوری۔مارچ 2019) میں شمس الرحمٰن فاروقی کی کتاب ’’اردو کا ابتدائی زمانہ: ادبی تہذیب و تاریخ کے پہلو‘‘ میں مذکور اس امر پر کئی تبصرے شائع ہوے ہیں کہ لفظ ’’اردو‘‘ کا اس زبان کے واحد نام کے طور پر بلا شرکتِ غیرے اور متفقہ طور Read more about اردو بنام ہندی (؟) ۔۔۔ اجمل کمال[...]

نظمیں ۔۔۔ مصحف اقبال توصیفی

وہ سنگھار کرتی ہے؎   مرد ہی سکھاتا ہے ایک پل کے جادو میں زاوئیے بدن کے سب سارے دائرے، قوسین کیسے رقص کرتے ہیں پھر وہ بھول جاتا ہے سچ ہے۔ کوئی جذبہ ہو چائے کی پیالی ہو میز۔ آدمی۔ کرسی ہجر۔ وصل، ہر شئے کی ایک عمر ہوتی ہے مرد اپنی ہی دھن Read more about نظمیں ۔۔۔ مصحف اقبال توصیفی[...]

نظمیں ۔۔۔ رفیق سندیلوی

عجیب ماہتاب ہے   عجیب ماہتاب ہے جو میرے دل کے عین وسط میں چمک رہا ہے جس سے سارا حاشیہ زمین کا دَمک رہا ہے یہ وُجود یہ نبُود و بُود جس مقامِ اتّصال پر کھڑے ہیں کُچھ سُجھائی دے نہیں رہا بس ایک دھُند سی ہے ایک کیف سا ہے جس میں وضع Read more about نظمیں ۔۔۔ رفیق سندیلوی[...]

نظمیں ۔۔۔ تنویر قاضی

خاکستری خواب کا موجد بے مثل فکشنسٹ، قدیم دوست اسلم سراج الدین کی یاد میں   خوابِ خاکستری کا سفر طے نہیں ہو سکا   کُنجِ دل میں کہیں کوئی حسرت اُٹھاتی ہے سر   عشق کے کھیل میں قرمزی حرف جیسے کبوتر تخیّل کی چھتری سے اُتریں غُٹر غُوں .. غُٹر غُوں   تواریخ Read more about نظمیں ۔۔۔ تنویر قاضی[...]

نظمیں ۔۔۔ اسنٰی بدر

نئی نظم   جب میں نظم لکھ رہی تھی آواز آئی.. واشنگ پاؤڈر کتنا پڑے گا؟ نظم نے مجھے جھنجھلا کر دیکھا میں نے دھیرے سے کہا، ایک کپ۔ جب میں نظم لکھ رہی تھی آواز آئی… دس کپڑے یا بارہ؟ نظم نے مجھے غصے سے دیکھا میں نے ہاتھ جوڑ کے معافی مانگی جلدی Read more about نظمیں ۔۔۔ اسنٰی بدر[...]

نظمیں ۔۔۔ سلیمان جاذب

سانپ ہمیشہ سانپ رہے گا   کسی بھی رنگ کا ہو کوئی بھی روپ ہو اس کا حسیں دلکش وہ جتنا ہو مگر سن لو ’’سپولا‘‘ سانپ کا بیٹا ہمیشہ سانپ رہتا ہے ٭٭٭       پردیس میں عید   سنو….اے دیس کے لوگو کہ یہ جو عید کا دن ہے اگر پردیس میں Read more about نظمیں ۔۔۔ سلیمان جاذب[...]

نظمیں ۔۔۔ آصف جانف

بے بسی کے کُتے   میں بہت مضبوط ہوں لیکن جب مجھے تمہاری یاد آتی ہے تو میں ریزہ ریزہ ہو کر ایسے بکھر جاتا ہوں جیسے ایٹم کے ذرات میں پگھل کر ایسے بہہ جاتا ہوں جیسے آبِ رواں میں خاموش ہو کر ایسے عالم میں چلا جاتا ہوں جہاں ہر طرف سے بے Read more about نظمیں ۔۔۔ آصف جانف[...]

غریب الدیار۔ مسعود جاوید ہاشمی ۔۔۔ ڈاکٹر رؤف خیر

اللہ کا شکر ہے ہمارے دکن کی سرزمین سے بڑی بڑی قابل شخصیتیں اپنے فکر و فن کا لوہا منواتی رہی ہیں۔ شعر و ادب کے حوالے سے گفتگو کی جائے تو امجد حیدرآبادی کی رباعیات کی داد سلیمان ندوی اور جوش ملیح آبادی جیسی مستند ہستیوں نے دی، صفی اورنگ آبادی کی سہلِ ممتنع Read more about غریب الدیار۔ مسعود جاوید ہاشمی ۔۔۔ ڈاکٹر رؤف خیر[...]

گرے کلر کی افسانہ نگار ۔۔۔ حافظ صفوان محمد

ڈاکٹر نسترن احسن فتیحی میرے استاد پروفیسر ڈاکٹر علی رفاد فتیحی کی اہلیہ ہیں اور علی گڑھ میں رہتی ہیں۔ مجھے پروفیسر صاحب کا ایک لیکچر اٹینڈ کرنے کا موقع ملا۔ اُن کی شخصیت اور علمیت کا اثر مجھ پہ ہمیشہ کے لیے مرتسم ہو گیا۔ یہ مضمون اِنہی احترامی جذبات کے ساتھ لکھ رہا Read more about گرے کلر کی افسانہ نگار ۔۔۔ حافظ صفوان محمد[...]

خوابوں کی انجیل ۔۔۔ سلویا پلاتھ / صغیر ملال

روزانہ صبح نو بجے سے شام پانچ بجے تک میں اپنی نشست پر بیٹھی دوسروں کے خواب ٹائپ کرتی رہتی ہوں۔ مجھے اسی لیے ملازم رکھا گیا ہے۔ میرے افسروں کا حکم ہے کہ میں تمام چیزیں ٹائپ کروں۔ خواب، شکایات، ماں سے اختلاف، بوتل اور بستر کے مسائل، باپ سے جھگڑا، سر درد جو Read more about خوابوں کی انجیل ۔۔۔ سلویا پلاتھ / صغیر ملال[...]

غزلیں ۔۔۔ عرفان ستار

ہاتھوں میں سپر ہے، نہ ہی شمشیر بکف ہوں اے شخص، میں تیرے لیے آسان ہدف ہوں   لہجے میں ہے میرے مری سچائی کی تلخی کیسے تجھے سمجھاؤں کہ میں تیری طرف ہوں   کٹتے گئے، چھٹتے گئے، بکتے گئے سب لوگ اب اہلِ جنوں کے لیے میں آخری صف ہوں   اے اہلِ Read more about غزلیں ۔۔۔ عرفان ستار[...]

غزلیں ۔۔۔ عرفان ستار

ہاتھوں میں سپر ہے، نہ ہی شمشیر بکف ہوں اے شخص، میں تیرے لیے آسان ہدف ہوں   لہجے میں ہے میرے مری سچائی کی تلخی کیسے تجھے سمجھاؤں کہ میں تیری طرف ہوں   کٹتے گئے، چھٹتے گئے، بکتے گئے سب لوگ اب اہلِ جنوں کے لیے میں آخری صف ہوں   اے اہلِ Read more about غزلیں ۔۔۔ عرفان ستار[...]

غزلیں ۔۔۔ ڈاکٹر رؤف خیر

کیچ چھٹتے نہیں یہ چھوڑ دیے جاتے ہیں کھیل کے رُخ کو نئے موڑ دیے جاتے ہیں   ہار نا جیتنا پہلے ہی سے طے ہوتا ہے جتنے قانون ہیں، سب توڑ دیے جاتے ہیں   تیسری آنکھ بھی سچ بول نہیں سکتی ہے لینس ایسے بھی کبھی جوڑ دیے جاتے ہیں   کھیلنے والے Read more about غزلیں ۔۔۔ ڈاکٹر رؤف خیر[...]

غزلیں ۔۔۔ احمد صفی

مجھ کو پچھلے پہر ہے پھر لائی *’شاہراہوں پہ میری تنہائی‘   گرد و گرما میں خوب بہلائی یہ طبیعت بھی تو ہے صحرائی   در پئے جان، جانِ جاں تم ہو اس طرح جان پر ہے بن آئی   ہاتھ میں فون ہے کہ دنیا ہے کوئی دیکھے تو عالم آرائی   تم نہیں Read more about غزلیں ۔۔۔ احمد صفی[...]

غزلیں ۔۔۔ مقصود وفاؔ

زندگی تھی ہی نہیں، زخم کسی یاد کے تھے ہم نے وہ دن بھی گزارے جو ترے بعد کے تھے   ہم کبھی کر نہ سکے ورنہ سخن ایسے بھی جو نہ تحسین کے تھے اور نہ کسی داد کے تھے   اب جو ویران ہوئے ہیں تو یقیں آتا نہیں ہم وہی لوگ ہیں Read more about غزلیں ۔۔۔ مقصود وفاؔ[...]

غزلیں ۔۔۔ شفق سوپوری

رونے لگا ہے بھبکا، جنازہ نکل گیا لوگو! چراغِ شب کا جنازہ نکل گیا   مرنا تھا اب کو، اب کی جگہ مرگیا ہے تب تب کے بجائے اب کا جنازہ نکل گیا   پہلے زبانِ اردو میں غسال گھس گئے پھر اس کے بعد ادب کا جنازہ نکل گیا   بولا طبلچی دیکھ کے Read more about غزلیں ۔۔۔ شفق سوپوری[...]

غزلیں ۔۔۔ اعجاز عبید

محترم شفق سوپوری نے جب اپنی یہ غزل جو اسی شمارے میں شامل ہے، پوسٹ کی تو خیال آیا کہ اس سے چار پانچ دن پہلے ہی اسی زمین میں کچھ اشعار مجھ سے بھی سرزد ہو گئے تھے، انہیں بھی شامل کر دیا جائے۔ چنانچہ حاضر ہیں بغیر مطلع کے یہ اشعار:   ساری Read more about غزلیں ۔۔۔ اعجاز عبید[...]

غزلیں ۔۔۔ اصغر شمیم

سارے رستے رہا یہ ڈر شاید ہو مرا آخری سفر شاید   اک دیا پھر جلائے بیٹھا ہوں کوئی آئے گا لوٹ کر شاید   جس کو دیکھو وہ دیکھتا ہے مجھے مجھ میں آیا ہے کچھ نظر شاید   میں مسلسل سفر میں رہتا ہوں بھول بیٹھا ہوں اپنا گھر شاید   زندگی سے Read more about غزلیں ۔۔۔ اصغر شمیم[...]

غزلیں ۔۔۔ شکیل خورشید

عرضِ احوال کی ہے تھوڑی سی انسیت جب بڑھی ہے تھوڑی سی   اب تسلی ہوئی ہے تھوڑی سی بات آگے چلی ہے تھوڑی سی   پھر تری یاد کے دریچے سے زندگی دیکھ لی ہے تھوڑی سی   ان سے کچھ عشق وِشق تھوڑا ہے یونہی دیوانگی ہے تھوڑی سی   چار پل ان Read more about غزلیں ۔۔۔ شکیل خورشید[...]

غزلیں ۔۔۔ جلیل حیدر لاشاری

جاگے ہوؤں کو جب بھی جگانا پڑا مجھے پتھر ہر ایک سمت سے کھانا پڑا مجھے   تم سے شکست جیت سے بڑھ کر تھی اس لیے جشن اپنی ہار کا بھی منانا پڑا مجھے   تیری سخاوتوں کی بہت دھوم جب سنی دست سوال اپنا گرانا پڑا مجھے   دیکھو رقابتوں پہ محبت کی Read more about غزلیں ۔۔۔ جلیل حیدر لاشاری[...]

غزلیں ۔۔۔ عظیم

اب چھوڑ کے تنہا مجھے بیٹھا ہے کہیں، وہ لیکن یہ مرا وہم ہے رہتا ہے یہیں وہ   پوچھا جو گیا مجھ سے کہ کیا چاہیے تم کو میں نے یہ کہا، کچھ بھی نہیں، کچھ بھی نہیں، وہ!   ہر حال میں رہتا ہے ہمیں یاد وہ پیارا ایسا تو نہیں بس ہی Read more about غزلیں ۔۔۔ عظیم[...]

غزلیں ۔۔۔ مقبول حسین

دو غزلہ   وُہ جن کے ظلم و ستم کی دُہائی دیتا ہے تو ووٹ دے کے انہیں پھر خدائی دیتا ہے   یہ مَکر کرتا ہے حاکم کہ ہے مسیحا وُہ وُہ ایسا ہے نہیں جیسا دکھائی دیتا ہے   ہر ایک بات پر اب صُوْر پھونکنا ہو گا کہ میری قوم کو اونچا Read more about غزلیں ۔۔۔ مقبول حسین[...]

غزلیں ۔۔۔ صابرہ امین

یہ نینا جب سے ساگر ہو گئے ہیں تو سارے گھاؤ بہتر ہو گئے ہیں   بنا ڈالا ہے اپنے دل کو پتھر ہم اب اس کے برابر ہو گئے ہیں   تمہارے لفظ تو شیریں بہت تھے مگر کیوں دل میں خنجر ہو گئے ہیں   غمِ دوراں، تمہاری یاد، آہیں ہمیں کیا کیا Read more about غزلیں ۔۔۔ صابرہ امین[...]

اپنے اپنے دائرے ۔۔۔ دیپک بدکی

ستیہ پرکاش کو آخر کار اس بات کا احساس ہو گیا کہ وہ اب کسی کی رہنمائی کرنے کے قابل نہیں ہے۔ در اصل اس کو ہمیشہ یہ زعم رہا کہ وہ بہت ہی تعلیم یافتہ ہے، اس نے دنیا دیکھی ہے اور گھاٹ گھاٹ کا پانی پیا ہے، اس لیے اس کے تجربات وسیع Read more about اپنے اپنے دائرے ۔۔۔ دیپک بدکی[...]

مصرف ۔۔۔ مریم تسلیم کیانی

اپنی برہنہ وڈیوز اور پرائیوٹ کالز کے وائرل ہونے کا سن کر ثمرہ حسن کا ری ایکشن بہت مختلف تھا! اس کی سیکرٹری عالیہ نے سخت پریشانی میں وہ تمام وڈیوز اپنے موبائل پر اسے دکھائی تھیں جن کی زیادہ تر عکس بندی عالیہ نے ہی کی تھی۔ ثمرہ یکے بعد دیگرے اپنی تمام وائرل Read more about مصرف ۔۔۔ مریم تسلیم کیانی[...]

زرد بلون ۔۔۔ نسترن احسن فتیحی

آسیہ گھبرائی ہوئی گھر میں داخل ہوئی۔ ’’ابا کیسے ہیں۔‘‘ اس نے سامنے سے آتی ہوئی ملازمہ سے پوچھا۔ ’’ٹھیک ہیں۔۔ سو رہے ہیں۔ ڈاکٹر نے انجکشن دیا ہے۔‘‘ آسیہ نے والد کے کمرے میں جھانکا۔ بستر پر بے ہوش پڑے تھے۔ کتنے کمزور ہو گئے ہیں۔۔ سرخ و سفید رنگ بالکل زرد ہو گیا Read more about زرد بلون ۔۔۔ نسترن احسن فتیحی[...]

جنرل ۔۔۔ داؤد کاکڑ

مجھے جنرل سے پیار تھا۔ اونچے قد و قامت اور صحت مند جسم پر سیاہ چمکدار رنگ کا خوبصورت لیکن خوفناک کتا جس کی دھاک دور دور تک بیٹھی ہوئی تھی . وہ امریکن پٹ بل (Pit Bull) اور پاکستانی بل ڈاگ (Bull Dog) دونوں کی خصوصیات کا ایک عجیب سا امتزاج تھا۔ ہمارا پورا Read more about جنرل ۔۔۔ داؤد کاکڑ[...]

فارورڈیریا Forwarderreah، واٹس اپ فارورڈ کرنے کی بیماری ۔۔۔ ڈاکٹر علیم خان فلکی

ایسے مریضوں کو یہ مضمون پڑھ کر ان شاء اللہ ایک رات میں افاقہ ہو جائے گا۔ یہ بیماری کرونا سے بھی زیادہ خطرناک بیماری ہے۔ یہ بیماری ڈائیریا یعنی پیچِش ہی کی طرح ہوتی ہے جو بھی پوسٹ آئے اگر فوری پاس آوٹ یعنی فارورڈ کر کے فارغ نہ ہو جائیں مریض کو سکون Read more about فارورڈیریا Forwarderreah، واٹس اپ فارورڈ کرنے کی بیماری ۔۔۔ ڈاکٹر علیم خان فلکی[...]

غبارِ حیرانی: شیشے کی طرح شفاف شاعری ۔۔۔ صابر

کل کی دوپہر احمد محفوظ کے شعری مجموعے ’غبارِ حیرانی‘ کے ساتھ گزاری لیکن اس پر احباب کے لکھے تبصرے اور مختصر تاثراتی تحریریں پچھلے دنوں تواتر سے پڑھنے کو ملتی رہی ہیں جن سے ایک تاثر جو ذہن پر قائم ہوا تھا وہ یہ کہ احمد محفوظ کی شاعری کو کلاسیکی رچاؤ کی شاعری Read more about غبارِ حیرانی: شیشے کی طرح شفاف شاعری ۔۔۔ صابر[...]

سالم سلیم کا مجموعۂ غزلیات ۔۔۔ ’واہمہ وجود کا‘۔۔۔ عبید طاہر

بھارت کے نوجوان شاعر سالم سلیم کی غزلوں کے مجموعے ’واہمہ وجود کا‘ کی ابتدا ریختہ کے بانی محترم سنجیو صراف صاحب کے اس جملے سے ہوتی ہے جو شاید ’ریختہ بُکس‘ کے تحت اس مجموعے کو شائع کرنے کا جواز بھی ہے کہ: ’’ریختہ فاؤنڈیشن کا ایک اہم اور بنیادی کام اردو شاعری کے Read more about سالم سلیم کا مجموعۂ غزلیات ۔۔۔ ’واہمہ وجود کا‘۔۔۔ عبید طاہر[...]

صابر: معبد تخلیق کا اعتکاف گزار ۔۔۔ ارشد جمال صارمؔ

فن شاعری کو رکھ رکھاؤ، وضع داری، خوش خلقی، محاکات نگاری اور منظر آفرینی سے تعبیر کیا جاتا ہے۔ اعلی شاعری خوبصورت قرینے، دلکش اسلوب اور کیفیاتی آمیزش سے جذب و کشش کا ایسا آئینہ پیش کرتی ہے جو عکس در عکس خوشگوار حیرت میں مبتلا کرتی رہتی ہے۔ یوں کہا جائے تو بے جا Read more about صابر: معبد تخلیق کا اعتکاف گزار ۔۔۔ ارشد جمال صارمؔ[...]

ساکت کنارے از تالیف حیدر ۔۔۔ شہرام سرمدی

ترقیات کے روز افزوں سفر پر گامزن اس دنیا میں، آج بھی اول اول کے نقوش کو نہ صرف یہ کہ قدر کی نگاہ سے دیکھا جاتا ہے بلکہ مذکورہ نقوش سے لگاؤ بھی ہنوز برقرار ہے۔ جیسے ایک صناع کی کاریگری اور اس کی صنائع دستی کے اچھوتے نمونے۔ ہرچند کہ صناع کے ان Read more about ساکت کنارے از تالیف حیدر ۔۔۔ شہرام سرمدی[...]