پرندہ ۔۔۔ خالدہ حسین

ہاں! میں انہیں خوب پہچانتا ہوں۔ یہ اسی کے قدموں کی چاپ ہے۔ زینے پر پوری گیارہ سیڑھیاں۔ پھر دروازے کی ہلکی سی آہٹ اور وہ قدم، نرم رواں بادلوں کے سے تیرتے قدم۔ ادھر اس دہلیز سے اندر ہوں گے اور اس کمرے کا وجود بدل جائے گا۔ میں بدل جاؤں گا۔ ایک ان Read more about پرندہ ۔۔۔ خالدہ حسین[…]

غزلیں ۔۔۔ سوہن راہی

شہر میں ہر سمت قتل عام ہے خون میں ڈوبی سحر اور شام ہے   جا بجا انسانیت کی دھجیاں ہر جگہ کہرام ہی کہرام ہے   آنکھ کی محراب،  اشکوں کے چراغ اب یہی منظر ہمارے نام ہے   چھوڑئیے رنگ چمن کی داستاں اب قفس میں ہی مجھے آرام ہے   حسن ہے Read more about غزلیں ۔۔۔ سوہن راہی[…]

میرے عہد کا ابتدائی دور ۔۔۔۔ اقبال مجید

میں نے نصف صدی پیشتر ادب کی دنیا میں باضابطہ قدم رکھا تھا۔ میرے ساتھیوں میں کچھ تو مر کھپ گئے، کچھ تھک چکے اور بعض اب بھی تواتر سے نہ سہی، کبھی نہ کبھی لکھ رہے ہیں۔ اپنے دور کے آغاز میں ہم نے تخلیق کے لیے ایک بے لوث اور مشفقانہ فضا پائی Read more about میرے عہد کا ابتدائی دور ۔۔۔۔ اقبال مجید[…]

اقبال مجید اپنے طرز کا تخلیق کار ۔۔۔ شگفتہ دلدار

اس سال ۱۸ جنوری ۲۰۱۹ کو ادبی دنیا کے افق سے ایک اور ستارہ ٹوٹ گیا۔ پچھلے کچھ ماہ سے اردو فکشن پر مصیبت کی گھڑی آ پڑی ہے ایک سے ایک بڑی ہستی جدا ہوتی جا رہی ہے۔ پہلے فہمیدہ ریاض، عمر میمن، ساقی فاروقی، فضیل جعفری، قاضی عبدالستار، اور پروفیسر حامدی کاشمیری وغیرہ Read more about اقبال مجید اپنے طرز کا تخلیق کار ۔۔۔ شگفتہ دلدار[…]

میری ماں کہاں؟ ۔۔۔ کرشنا سوبتی

بہت دن کے بعد اس نے چاند ستارے دیکھے ہیں۔ اب تک وہ کہاں تھا؟ نیچے، نیچے، شاید بہت نیچے۔۔۔ جہاں کی کھائی انسان کے خون سے بھر گئی تھی۔ جہاں اس کے ہاتھ کی صفائی بیشمار گولیوں کی بوچھار کر رہی تھی۔ لیکن، لیکن وہ نیچے نہ تھا۔ وہ تو اپنے نئے وطن کی Read more about میری ماں کہاں؟ ۔۔۔ کرشنا سوبتی[…]

غزلیں۔ ۔ ۔ سہیل اختر

ایسا وردان ملے جس کو وہ پاگل ہو جائے ہاتھ سونے کو لگاتا ہوں تو پیتل ہو جائے   تنہا رہنا ہے تو تنہائی مکمل ہو جائے کیوں نہ ہر شخص تصور سے بھی اوجھل ہو جائے   مر چکا آنکھ میں امید کا پنچھی میرا میرے ارمانوں کی دھرتی بھی نہ دلدل ہو جائے Read more about غزلیں۔ ۔ ۔ سہیل اختر[…]

غزلیں ۔۔۔ سوہن راہی

شہر میں ہر سمت قتل عام ہے خون میں ڈوبی سحر اور شام ہے   جا بجا انسانیت کی دھجیاں ہر جگہ کہرام ہی کہرام ہے   آنکھ کی محراب،  اشکوں کے چراغ اب یہی منظر ہمارے نام ہے   چھوڑئیے رنگ چمن کی داستاں اب قفس میں ہی مجھے آرام ہے   حسن ہے Read more about غزلیں ۔۔۔ سوہن راہی[…]

تبصرہ ’تم کیسر ہم کیاری‘ ۔۔۔ مجاہد الاسلام

نام کتاب (مجموعہ گیت): تم کیسر ہم کیاری شاعر: سوہن راہی ملنے کا پتہ: مکتبہ عمران ڈائجسٹ، اردو بازار، کراچی، پاکستان۔ قیمت : 200 روپے مبصر : ڈاکٹر مجاہد الاسلام اسسٹنٹ پروفیسر (اردو) مانو لکھنؤ کیمپس، لکھنؤ   سوہن راہی کا وطن مالوف پھگواڑہ، ضلع کپورتھلہ، پنجاب ہی ہے۔ مگر وہ کم و بیش پانچ Read more about تبصرہ ’تم کیسر ہم کیاری‘ ۔۔۔ مجاہد الاسلام[…]

جب میں روتا ہوں۔ ۔ ۔ وشنو پد سیٹھی/سہیل اختر

  اڑیا سے ترجمہ   میرے اندر کوئی ہونا چاہتا ہے محوِ گفتگو کسی نا معلوم زبان میں باتیں کرنا چاہتا ہے مجھ سے زخمی اور گداز احساسات کے بارے میں اور اس آواز کو میرے علاوہ نہیں سن پاتا کوئی اور   یہ خاموش الفاظ ہیں کہے ہوئے اور ان کہے جملوں کے درمیان Read more about جب میں روتا ہوں۔ ۔ ۔ وشنو پد سیٹھی/سہیل اختر[…]

خالدہ حسین: ایک بھید بھری بات ۔۔۔ گفتگو: قرۃ العین طاہرہ

  ٭  لکھنے کی تحریک کیونکر ہوئی؟ ٭٭  لکھنے کی تحریک پڑھنے سے ہوئی۔  گھر کا ماحول ادبی تھا۔  زیادہ تر سائنس پڑھتے تھے۔  پھر بھی والد اور بھائی بہنوں میں شعر و ادب کا ذوق موجود تھا۔  والد علامہ اقبال پڑھا کرتے تھے۔  دادا مثنوی معنوی پڑھتے تھے۔  ہمیں کچھ سمجھ میں نہ آتا Read more about خالدہ حسین: ایک بھید بھری بات ۔۔۔ گفتگو: قرۃ العین طاہرہ[…]